Diontae Johnson Authentic Jersey  Hadith e Nabavi (S.A.W) - MUSNAD AHMED

MUSNAD AHMED

Search Results(1)

41)

41) چاشت کی نماز کے بارے میں ابواب

Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 2378

۔ (۲۳۷۸) عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ قَالَ: کَانَ رَسُوْلُ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم یَجْمَعُ بَیْنَ الصَّلَاتَیْنِ فِی السَّفَرِ، الْمَغْرِبِ وَالْعِشَائِ وَالظُّہْرِ وَالْعَصْرِ۔ (مسند احمد: ۱۸۷۴)
سیّدناعبد اللہ بن عباس ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم سفر میں دو نمازوں کو جمع کرلیا کرتے تھے، یعنی مغرب و عشاء کو اور ظہر وعصرکو۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 2379

۔ (۲۳۷۹) عَنْ عَبْدِاللّٰہِ بْنِ شَقِیْقٍ قَالَ: خَطَبَنَا ابْنُ عَبَّاسٍ یَوْمًا بَعْدَ الْعَصْرِ حَتّلی غَرَبَتِ الشَّمْسُ وَبَدَتِ النُّجُوْمُ وَعَلِقَ النَّاسُ یُنَادُوْنَہُ: اَلصَّلَاۃَ، وَفِی الْقَوْمِ رَجُلٌ مِنْ بَنِی تَمِیْمٍ فَجَعَلَ یَقُوْلُ: اَلصَّلَاۃَ اَلصَّلَاۃَ، قَالَ: فَغَضِبَ، قَالَ: أَتُعَلِّمُنِی بِالسُّنَّۃِ؟ شَہِدْتُّ رَسُوْلَ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم جَمَعَ بَیْنَ الظُّہْرِ وَالْعَصْرِ وَالْمَغْرِبِ وَالْعِشَائِ، قَالَ عَبْدُ اللّٰہِ: فَوَجَدْتُّ فِی نَفْسِی مِنْ ذٰلِکَ شَیْئًا فَلَقِیْتُ أَبَا ھُرَیْرَۃَ فَسَأَلْتُہُ فَوَافَقَہُ۔ (مسند احمد: ۲۲۶۹)
عبد اللہ بن شقیق کہتے ہیں:ایک دن سیّدنا عبد اللہ بن عباس ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ نے ہمیں عصر کے بعد خطبہ دیا، حتی کہ سورج غروب ہوگیا اور ستارے ظاہر ہونے لگے۔ لوگوں نے یہ آواز لگانا شروع کی کہ نماز پڑھو۔لوگوں میں بنی تمیم کا ایک آدمی بھی موجود تھا، اس نے بھی یہ کہنا شروع کر دیا کہ نماز، نماز۔سیّدنا عبد اللہ بن عباس ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ غصے میں آگئے اور کہنے لگے: کیا تو مجھے سنت کی تعلیم دے رہا ہے؟ میں رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم کے ساتھ حاضر تھا، آپ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے ظہر و عصر اور مغرب و عشاء کو جمع کر کے ادا کیا۔ عبد اللہ بن شقیق کہتے ہیں: میں اپنے دل میں (شک اور تعجب) محسوس کرنے لگا، اس لیے میں سیّدنا ابو ہریرہ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ کو ملااور ان سے اس مسئلے کے بارے میں دریافت کیا، انھوں نے بھی اِن کی موافقت کی۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 2380

۔ (۲۳۸۰) عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِکٍ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ قَالَ: کَانَ رَسُوْلُ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم یَجْمَعُ بَیْنَ الظُّہْرِ وَالْعَصْرِ وَالْمَغْرِبِ وَالْعِشَائِ فِی الْسَّفَرِ۔ (مسند احمد: ۱۲۴۳۵)
سیّدنا انس بن مالک ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم سفر میں ظہرو عصر اور مغرب و عشاء کو جمع کرلیا کرتے تھے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 2381

۔ (۲۳۸۱) عَنْ أَبِی الطُّفِیْلِ ثَنَا مُعَاذُ بْنُ جَبَلٍ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ قَالَ: خَرَجَ رَسُوْلُ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم فِی سَفْرَۃٍ سَافَرَھَا وَذٰلِکَ فِی غَزْوَۃِ تَبُوْکَ فَجَمَعَ بَیْنَ الْظُّہْرِ وَالْعَصْرِ وَالْمَغْرِبِ وَالْعِشَائِ، قُلْتُ: مَا حَمَلَہُ عَلٰی ذَلِکَ؟ قَالَ: أَرَادَ أَنْ لَا یُحْرِجَ أُمَّتَہُ۔ (مسند احمد: ۲۲۳۴۷)
سیّدنامعاذ بن جبل ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم ایک سفر میں نکلے، یہ غزوۂ تبوک کا واقعہ تھا، آپ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے ظہر و عصر اور مغرب و عشاء کو جمع کر کے ادا کیا۔ راوی کہتا ہے: میں نے کہا کہ آپ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم کو اس کام پر کس چیز نے آمادہ کیا تھا؟ انہوں نے کہا:آپ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم کا ارادہ یہ تھا کہ آپ اپنی امت پر تنگی نہ کریں۔

آیت نمبر