AL NISAI

Search Result (96)

36)

36) شرطوں ‌كے ‌احكام و مسائل

Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3792

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ سُلَيْمَانَ الرُّهَاوِيُّ، ‏‏‏‏‏‏وَمُوسَى بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بِشْرٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْمُوسَى بْنِ عُقْبَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَالِمِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ كَانَتْ يَمِينٌ يَحْلِفُ عَلَيْهَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا وَمُقَلِّبِ الْقُلُوبِ .
It was narrated that Ibn 'Umar said: The oath by which the Messenger of Allah used to swear was: 'No, by the Controller of the hearts.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جو قسم کھاتے تھے وہ یہ تھی «‏لا ومقلب القلوب»  نہیں، اس کی قسم جو دلوں کو پھیر نے والا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3793

أَخْبَرَنِي مُحَمَّدُ بْنُ يَحْيَى بْنِ عَبْدِ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الصَّلْتِ أَبُو يَعْلَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ رَجَاءٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْعَبَّادِ بْنِ إِسْحَاق، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَالِمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ كَانَتْ يَمِينُ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ الَّتِي يَحْلِفُ بِهَا:‏‏‏‏ لَا وَمُصَرِّفِ الْقُلُوبِ .
It was narrated from Salim that his father said: The oath by which the Messenger of Allah used to swear was: 'No, by the Controller of the hearts.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جو قسم کھاتے تھے وہ یہ تھی «لا ومصرف القلوب»  نہیں، اس کی قسم جو دلوں کو پھیرنے والا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3794

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ إِبْرَاهِيمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا الْفَضْلُ بْنُ مُوسَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ عَمْرٍو، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو سَلَمَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَمَّا خَلَقَ اللَّهُ الْجَنَّةَ وَالنَّارَ،‏‏‏‏ أَرْسَلَ جِبْرِيلَ عَلَيْهِ السَّلَام إِلَى الْجَنَّةِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ انْظُرْ إِلَيْهَا وَإِلَى مَا أَعْدَدْتُ لِأَهْلِهَا فِيهَا. فَنَظَرَ إِلَيْهَا فَرَجَعَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ وَعِزَّتِكَ لَا يَسْمَعُ بِهَا أَحَدٌ إِلَّا دَخَلَهَا فَأَمَرَ بِهَا فَحُفَّتْ بِالْمَكَارِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ اذْهَبْ إِلَيْهَا فَانْظُرْ إِلَيْهَا وَإِلَى مَا أَعْدَدْتُ لِأَهْلِهَا فِيهَا. فَنَظَرَ إِلَيْهَا فَإِذَا هِيَ قَدْ حُفَّتْ بِالْمَكَارِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ وَعِزَّتِكَ لَقَدْ خَشِيتُ أَنْ لَا يَدْخُلَهَا أَحَدٌ. قَالَ:‏‏‏‏ اذْهَبْ فَانْظُرْ إِلَى النَّارِ وَإِلَى مَا أَعْدَدْتُ لِأَهْلِهَا فِيهَا. فَنَظَرَ إِلَيْهَا فَإِذَا هِيَ يَرْكَبُ بَعْضُهَا بَعْضًا فَرَجَعَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ وَعِزَّتِكَ لَا يَدْخُلُهَا أَحَدٌ. فَأَمَرَ بِهَا فَحُفَّتْ بِالشَّهَوَاتِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ ارْجِعْ فَانْظُرْ إِلَيْهَا. فَنَظَرَ إِلَيْهَا فَإِذَا هِيَ قَدْ حُفَّتْ بِالشَّهَوَاتِ فَرَجَعَ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ:‏‏‏‏ وَعِزَّتِكَ لَقَدْ خَشِيتُ أَنْ لَا يَنْجُوَ مِنْهَا أَحَدٌ إِلَّا دَخَلَهَا .
It was narrated from Abu Hurairah that the Messenger of Allah said: When Allah created Paradise and Hell, He sent Jibril, peace be upon him, to Paradise and said: 'Look at it and at what I have prepared for its people in it.' He looked at it, then he came back and said: 'By Your Glory, no one will hear of it but he will enter it.' So He commanded that it be surrounded by hardships and said: 'Go and look at it and at what I have prepared for its people in it.' He looked at it and saw that it had been surrounded with hardships. He (Jibril) said: 'By Your Glory, I fear that no one will enter it.' He (Allah) said: 'Go and look at the Fire and at what I have prepared for its people in it.' So he looked at it and parts of it were piled upon other parts. He came back and said: 'By Your Glory, no one will enter it.' So He commanded that it be surrounded with pleasures and said: 'Go and look at it.' So he looked at it and saw that it was surrounded with pleasures. He came back and said: 'By Your Glory, I fear that no one will be saved from it and all will enter it.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ نے جب جنت اور جہنم کو پیدا کیا تو جبرائیل کو جنت کے پاس بھیجا اور فرمایا: اسے اور ان چیزوں کو دیکھو جو میں نے اس میں اس کے مستحقین کے لیے تیار کی ہیں، چنانچہ انہوں نے اسے دیکھا اور لوٹ کر آئے تو کہا: قسم ہے تیری عزت اور غلبے کی! ۱؎ جو کوئی بھی اس کے بارے میں سنے گا اس میں داخل ہوئے بغیر نہ رہے گا، پھر اس کے بارے میں حکم دیا تو اسے مکروہ ناپسندیدہ چیزوں سے گھیر دیا گیا ۲؎، پھر کہا: جاؤ اسے اور ان چیزوں کو دیکھو جو میں نے اس میں اس کے مستحقین کے لیے تیار کی ہیں، چنانچہ انہوں نے اس پر نظر ڈالی تو دیکھا کہ وہ ناپسندیدہ چیزوں سے گھیر دی گئی ہے، انہوں نے کہا: تیری عزت اور غلبے کی قسم! مجھے اس بات کا ڈر ہے کہ اس میں کوئی داخل نہ ہو گا، کہا: جاؤ اور جہنم کو اور ان چیزوں کو دیکھو جو میں نے اس کے مستحقین کے لیے تیار کی ہیں، انہوں نے اس پر نظر ڈالی تو دیکھا کہ اس کا ایک حصہ دوسرے حصے پر چڑھا جا رہا ہے ۳؎، وہ لوٹ کر آئے اور بولے: تیری عزت اور غلبے کی قسم! اس میں کوئی داخل نہ ہو گا، پھر اللہ تعالیٰ نے اس کے بارے میں حکم دیا تو وہ دل کو بھانے والی چیزوں سے گھیر دی گئی۔  ( پھر اللہ تعالیٰ نے )  کہا: واپس جا کر اب اسے دیکھو۔ انہوں نے اس پر نظر ڈالی تو دیکھا کہ وہ پسندیدہ چیزوں سے گھیر دی گئی ہے۔ وہ لوٹے اور کہا: تیرے غلبے کی قسم! مجھے ڈر ہے کہ اس میں تو کوئی داخل ہونے سے نہ بچ سکے گا  ۴؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3795

أَخْبَرَنَا عَلِيُّ بْنُ حُجْرٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ إِسْمَاعِيل وَهُوَ ابْنُ جَعْفَرٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ دِينَارٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ كَانَ حَالِفًا فَلَا يَحْلِفْ إِلَّا بِاللَّهِ ، ‏‏‏‏‏‏وَكَانَتْ قُرَيْشٌ تَحْلِفُ بِآبَائِهَا، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ لَا تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ .
It was narrated that Ibn 'Umar said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears, let him not swear by anything other than Allah.' The Quraish used to swear by their forefathers, and so he said: Do not swear by your forefathers. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو قسم کھائے تو وہ اللہ کے سوا کسی اور کی قسم نہ کھائے ، اور قریش اپنے باپ دادا کی قسم کھاتے تھے تو آپ نے فرمایا:  تم اپنے باپ دادا کی قسم نہ کھاؤ ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3796

أَخْبَرَنِي زِيَادُ بْنُ أَيُّوبَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ عُلَيَّةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ أَبِي إِسْحَاق، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي رَجُلٌ مِنْ بَنِي غِفَارٍ فِي مَجْلِسِ سَالِمِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ سَالِمُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عَبْدَ اللَّهِ يَعْنِي ابْنَ عُمَرَ وَهُوَ يَقُولُ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ يَنْهَاكُمْ أَنْ تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ .
Yahya bin Abi Ishaq said: A man from Banu Ghifar told me, in the gathering of Salim bin 'Abdullah, Salim bin 'Abdullah said: 'I heard 'Abdullah -that is, Ibn 'Umar- say: The Messenger of Allah said: 'Allah forbids you to swear by your forefathers.' ' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ تعالیٰ تمہیں اس بات سے روکتا ہے کہ تم اپنے باپ دادا کی قسم کھاؤ
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3797

أَخْبَرَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ سَعِيدٍ، ‏‏‏‏‏‏وَقُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ وَاللَّفْظُ لَهُ،‏‏‏‏ قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَالِمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عُمَرَ مَرَّةً وَهُوَ يَقُولُ:‏‏‏‏ وَأَبِي،‏‏‏‏ وَأَبِي. فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ يَنْهَاكُمْ أَنْ تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ ، ‏‏‏‏‏‏فَوَاللَّهِ مَا حَلَفْتُ بِهَا بَعْدُ ذَاكِرًا،‏‏‏‏ وَلَا آثِرًا.
It was narrated from Salim, from his father, that on one occasion the Prophet heard 'Umar saying: By my father and by my mother. He said: Allah forbids you to swear by your forefathers. 'Umar said: By Allah, I never swore by them again, whether saying it for myself or reporting it of others. ایک بار نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے عمر رضی اللہ عنہ کو کہتے سنا: میرے باپ کی قسم! میرے باپ کی قسم! تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ تعالیٰ تمہیں اس بات سے روکتا ہے کہ تم اپنے باپ دادا کی قسم کھاؤ ۔  ( عمر رضی اللہ عنہ کہتے ہیں )  اللہ کی قسم! اس کے بعد پھر میں نے کبھی ان کی قسم نہیں کھائی، نہ تو خود اپنی بات بیان کرتے ہوئے اور نہ ہی دوسرے کی بات نقل کرتے ہوئے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3798

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ يَزِيدَ، ‏‏‏‏‏‏وَسَعِيدُ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ وَاللَّفْظُ لَهُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْسَالِمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ يَنْهَاكُمْ أَنْ تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ عُمَرُ:‏‏‏‏ فَوَاللَّهِ مَا حَلَفْتُ بِهَا بَعْدُ ذَاكِرًا وَلَا آثِرًا
It was narrated from 'Umar that the Prophet said: Allah forbids you to swear by your forefathers. 'Umar said: By Allah, I never swore by them again, whether saying it for myself or reporting of others. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ تعالیٰ تمہیں اس بات سے روکتا ہے کہ تم اپنے باپ دادا کی قسم کھاؤ ۔ عمر رضی اللہ عنہ کہتے ہیں: اللہ کی قسم! اس کے بعد پھر کبھی میں نے خود اپنی بات بیان کرتے ہوئے یا دوسرے کی بات نقل کرتے ہوئے ان کی قسم نہیں کھائی۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3799

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عُثْمَانَ بْنِ سَعِيدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا مُحَمَّدٌ وَهُوَ ابْنُ حَرْبٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّبَيْدِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سَالِمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْأَبِيهِ أَنَّهُ أَخْبَرَهُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ يَنْهَاكُمْ أَنْ تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ عُمَرُ:‏‏‏‏ فَوَاللَّهِ مَا حَلَفْتُ بِهَا بَعْدُ ذَاكِرًا،‏‏‏‏ وَلَا آثِرًا.
It was narrated from Salim, from his father, that he told him from 'Umar: The Messenger of Allah said: 'Allah forbids you to swear by your forefathers.' 'Umar said: By Allah, I never swore by them again, whether saying it for myself or reporting it of others. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ تعالیٰ تمہیں اس بات سے روکتا ہے کہ تم اپنے باپ دادا کی قسم کھاؤ ۔ عمر رضی اللہ عنہ نے کہا: اللہ کی قسم! میں نے اس کے بعد ان کی قسم نہیں کھائی، نہ تو خود کچھ بیان کرتے ہوئے اور نہ ہی کسی دوسرے کی بات نقل کرتے ہوئے
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3800

أَخْبَرَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ عَلِيٍّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ مُعَاذٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبِي، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَوْفٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ سِيرِينَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ وَلَا بِأُمَّهَاتِكُمْ وَلَا بِالْأَنْدَادِ، ‏‏‏‏‏‏وَلَا تَحْلِفُوا إِلَّا بِاللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏وَلَا تَحْلِفُوا إِلَّا وَأَنْتُمْ صَادِقُونَ .
It was narrated that Abu Hurairah said: The Messenger of Allah said: 'Do not swear by your fathers, nor by your mothers nor by the idols. Swear only by Allah, and do not swear unless you are sincere.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  تم اپنے ماں باپ، دادا، دادی اور شریکوں ۱؎ کی قسم نہ کھاؤ، اور نہ اللہ کے سوا کسی اور کی قسم کھاؤ اور تم قسم نہ کھاؤ سوائے اس کے کہ تم سچے ہو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3801

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي عَدِيٍّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ خَالِدٍ. ح وَأَنْبَأَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ بَزِيعٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَزِيدُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَالِدٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي قِلَابَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ثَابِتِ بْنِ الضَّحَّاكِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ بِمِلَّةٍ سِوَى الْإِسْلَامِ كَاذِبًا فَهُوَ كَمَا قَالَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ قُتَيْبَةُ فِي حَدِيثِهِ:‏‏‏‏ مُتَعَمِّدًا ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ يَزِيدُ:‏‏‏‏ كَاذِبًا فَهُوَ كَمَا قَالَ . (حديث مرفوع) (حديث موقوف) وَمَنْ قَتَلَ نَفْسَهُ بِشَيْءٍ عَذَّبَهُ اللَّهُ بِهِ فِي نَارِ جَهَنَّمَ .
It was narrated that Thabit bin Ad-Dahhak said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears by a religion other than Islam, telling a lie, will be as he said.' In his narration, Qutaibah said: Intentionally. Yazid said: Telling a lie will be as he said, and whoever kills himself with something. Allah will punish him with it in the Fire of Hell. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اسلام کے سوا کسی اور ملت و مذہب کی جو کوئی جھوٹی قسم کھائے تو وہ ویسا ہی ہو گا جیسا اس نے کہا ، قتیبہ نے اپنی حدیث میں «متعمدا» کہا ہے  ( یعنی دوسری ملت کی جان بوجھ کر قسم کھائے )  اور یزید نے «كاذبا» کہا ہے  ( جو دوسری ملت کی جھوٹی قسم کھائے گا )  تو وہ ویسا ہی ہو گا جیسا اس نے کہا ۱؎ اور جو کوئی اپنے آپ کو کسی چیز سے قتل کر لے گا تو اللہ تعالیٰ اسے جہنم کی آگ میں اسی چیز سے عذاب دے گا۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3802

أَخْبَرَنِي مَحْمُودُ بْنُ خَالِدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْوَلِيدُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو عَمْرٍو، ‏‏‏‏‏‏عَنْ يَحْيَى أَنَّهُ حَدَّثَهُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَبُو قِلَابَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي ثَابِتُ بْنُ الضَّحَّاكِ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ بِمِلَّةٍ سِوَى الْإِسْلَامِ كَاذِبًا فَهُوَ كَمَا قَالَ:‏‏‏‏ وَمَنْ قَتَلَ نَفْسَهُ بِشَيْءٍ عُذِّبَ بِهِ فِي الْآخِرَةِ .
Thabit bin Ad-Dahhak narrated that the Messenger of Allah said: Whoever swears by a religion other than Islam, telling a lie, will be as he said, and whoever kills himself with something will be punished with it in the Hereafter. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے اسلام کے سوا کسی ملت و مذہب کی جھوٹی قسم کھائی تو وہ ویسا ہی ہے، جیسا اس نے کہا، اور جس نے خود کو کسی چیز سے مار ڈالا  ( خودکشی کر لی )  تو اسے آخرت میں اسی چیز سے عذاب دیا جائے گا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3803

أَخْبَرَنَا الْحُسَيْنُ بْنُ حُرَيْثٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْفَضْلُ بْنُ مُوسَى، ‏‏‏‏‏‏عَنْ حُسَيْنِ بْنِ وَاقِدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ بُرَيْدَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْأَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ قَالَ إِنِّي بَرِيءٌ مِنَ الْإِسْلَامِ فَإِنْ كَانَ كَاذِبًا فَهُوَ كَمَا قَالَ، ‏‏‏‏‏‏وَإِنْ كَانَ صَادِقًا لَمْ يَعُدْ إِلَى الْإِسْلَامِ سَالِمًا .
It was narrated from 'Abdullah bin Buraidah that his father said: The Messenger of Allah said: 'Whoever says: I have nothing to do with Islam, if he is lying then he is as he said, and if he is telling the truth, his Islam will not be sound.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے کہا:  ( اگر میں نے یہ کیا ہوا تو )  میں اسلام سے بری اور لاتعلق ہوں، تو اگر وہ جھوٹا ہے تو وہ ویسا ہی ہے جیسا اس نے کہا، اور اگر وہ سچا ہے تو بھی وہ اسلام کی طرف صحیح سالم نہیں لوٹے گا
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3804

أَخْبَرَنَا يُوسُفُ بْنُ عِيسَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْفَضْلُ بْنُ مُوسَى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مِسْعَرٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَعْبَدِ بْنِ خَالِدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ يَسَارٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ قُتَيْلَةَ امْرَأَةٍ مِنْ جُهَيْنَةَ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ يَهُودِيًّا أَتَى النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّكُمْ تُنَدِّدُونَ،‏‏‏‏ وَإِنَّكُمْ تُشْرِكُونَ،‏‏‏‏ تَقُولُونَ:‏‏‏‏ مَا شَاءَ اللَّهُ وَشِئْتَ،‏‏‏‏ وَتَقُولُونَ:‏‏‏‏ وَالْكَعْبَةِ. فَأَمَرَهُمُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِذَا أَرَادُوا أَنْ يَحْلِفُوا أَنْ يَقُولُوا:‏‏‏‏ وَرَبِّ الْكَعْبَةِ، ‏‏‏‏‏‏وَيَقُولُونَ:‏‏‏‏ مَا شَاءَ اللَّهُ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ شِئْتَ .
It was narrated from 'Abdullah bin Yasar, from Qutailah, a woman from Juhainah, that a Jew came to the Prophet and said: You are setting up rivals (to Allah) and associating others (with Him). You say: 'Whatever Allah wills and you will,' and you say: 'By the Ka'bah.' So the Prophet commanded them, if they wanted to swear an oath, to say: By the Lord of the Ka'bah; and to say: Whatever Allah wills, then what you will. ایک یہودی نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آ کر کہا: تم لوگ  ( غیر اللہ کو اللہ کے ساتھ ) شریک ٹھہراتے اور شرک کرتے ہو، تم کہتے ہو: جو اللہ چاہے اور آپ چاہیں، اور تم کہتے ہو: کعبے کی قسم! تو نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے انہیں حکم دیا کہ جب وہ قسم کھانا چاہیں تو کہیں:  کعبے کے رب کی قسم!  اور کہیں:  جو اللہ چاہے پھر آپ جو چاہیں
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3805

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ سُلَيْمَانَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَزِيدُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا هِشَامٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الْحَسَنِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ لَا تَحْلِفُوا بِآبَائِكُمْ، ‏‏‏‏‏‏وَلَا بِالطَّوَاغِيتِ .
It was narrated from 'Abdur-Rahman bin Samurah that the Prophet said: Do not swear by your forefathers or by false gods (At-Tawaghit). نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اپنے باپ دادا کی قسم نہ کھاؤ، اور نہ طاغوتوں  ( جھوٹے معبودوں )  کی ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3806

أَخْبَرَنَا كَثِيرُ بْنُ عُبَيْدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ حَرْبٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّبَيْدِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ حُمَيْدِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْأَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ مِنْكُمْ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ بِاللَّاتِ،‏‏‏‏ فَلْيَقُلْ:‏‏‏‏ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ،‏‏‏‏ وَمَنْ قَالَ لِصَاحِبِهِ:‏‏‏‏ تَعَالَ أُقَامِرْكَ،‏‏‏‏ فَلْيَتَصَدَّقْ .
It was narrated that Abu Hurairah said: The Messenger of Allah said: 'Whoever among you swears and says: By Al-Lat, let him say: La ilaha illallah (There is none worthy of worship except Allah). And whoever says to his companion: Come, let us gamble, then let him give in charity.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  تم میں سے جو قسم کھائے اور کہے: لات  ( بت )  کی قسم، تو اسے چاہیئے کہ وہ لا الٰہ الا اللہ پڑھے، اور جو اپنے ساتھی سے کہے: آؤ تمہارے ساتھ جوا کھیلیں گے ) تو اسے چاہیئے کہ صدقہ کرے
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3807

أَخْبَرَنَا أَبُو دَاوُدَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ مُحَمَّدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا زُهَيْرٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو إِسْحَاق، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مُصْعَبِ بْنِ سَعْدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا نَذْكُرُ بَعْضَ الْأَمْرِ،‏‏‏‏ وَأَنَا حَدِيثُ عَهْدٍ بِالْجَاهِلِيَّةِ،‏‏‏‏ فَحَلَفْتُ بِاللَّاتِ وَالْعُزَّى، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ لِي أَصْحَابُ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ بِئْسَ مَا قُلْتَ،‏‏‏‏ ائْتِ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَأَخْبِرْهُ،‏‏‏‏ فَإِنَّا لَا نَرَاكَ إِلَّا قَدْ كَفَرْتَ،‏‏‏‏ فَأَتَيْتُهُ فَأَخْبَرْتُهُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ لِي:‏‏‏‏ قُلْ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَحْدَهُ لَا شَرِيكَ لَهُ ثَلَاثَ مَرَّاتٍ،‏‏‏‏ وَتَعَوَّذْ بِاللَّهِ مِنَ الشَّيْطَانِ ثَلَاثَ مَرَّاتٍ،‏‏‏‏ وَاتْفُلْ عَنْ يَسَارِكَ ثَلَاثَ مَرَّاتٍ،‏‏‏‏ وَلَا تَعُدْ لَهُ .
It was narrated from Mus'ab bin Sa'd that his father said: We were talking about something, and I had only recently left Jahiliyyah behind, so I swore by Al-Lat and Al-'Uzza. The Companions of the Messenger of Allah said to me: 'What a bad thing you have said! Go to the Messenger of Allah and tell him, for we think that you have committed Kufr.' So I went to him and told him, and he said to me: 'Say: La ilaha illallah wahdahu la sharika lah (There is none worthy of worship except Allah alone, without partner) three times, and seek refuge with Allah from the Shaitan three times, and spit dryly to your left three times, and do not say that again.' ہم ایک معاملے کا ذکر کر رہے تھے اور میں نیا نیا مسلمان ہوا تھا، میں نے لات و عزیٰ کی قسم کھا لی، تو مجھ سے صحابہ کرام نے کہا کہ تم نے بری بات کہی، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس جاؤ اور آپ کو اس کی خبر دو کیونکہ ہمارے خیال میں تو تم نے کفر کا ارتکاب کیا ہے، چنانچہ میں نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو اس کی اطلاع دی تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھ سے فرمایا:  تین بار: «لا إله إلا اللہ وحده لا شريك له» کہو اور تین بار شیطان سے اللہ کی پناہ مانگو اور تین بار اپنے بائیں طرف تھوک دو اور پھر دوبارہ کبھی ایسا نہ کہنا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3808

أَخْبَرَنَا عَبْدُ الْحَمِيدِ بْنُ مُحَمَّدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مَخْلَدٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يُونُسُ بْنُ أَبِي إِسْحَاق، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي مُصْعَبُ بْنُ سَعْدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَلَفْتُ بِاللَّاتِ وَالْعُزَّى، ‏‏‏‏‏‏فقال لِي أَصْحَابِي:‏‏‏‏ بِئْسَ مَا قُلْتَ،‏‏‏‏ قُلْتَ هُجْرًا. فَأَتَيْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَذَكَرْتُ ذَلِكَ لَهُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ قُلْ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَحْدَهُ لَا شَرِيكَ لَهُ، ‏‏‏‏‏‏لَهُ الْمُلْكُ وَلَهُ الْحَمْدُ وَهُوَ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ قَدِيرٌ، ‏‏‏‏‏‏وَانْفُثْ عَنْ يَسَارِكَ ثَلَاثًا،‏‏‏‏ وَتَعَوَّذْ بِاللَّهِ مِنَ الشَّيْطَانِ ثُمَّ لَا تَعُدْ .
Mus'ab bin Sa'd narrated that his father said: I swore by Al-Lat and Al-'Uzza and my companions said to me: 'What a bad thing you have said! You have said something horrible.' So I went to the Messenger of Allah and told him about that. He said: 'Say: La ilaha illallah wahdahu la sharika lah, lahul-mulk wa lahul-hamd wa huwa 'ala kulli shay'in qadir (There is none worthy of worship except Allah with no partner or associate; His is the Dominion, to Him be all praise, and He is able to do all things). Spit to your left three times, seek refuge with Allah from the Shaitan, and do not say that again.' میں نے لات و عزیٰ کی قسم کھا لی تو میرے ساتھیوں نے مجھ سے کہا: تم نے بری بات کہی ہے، تم نے فحش بات کہی ہے، میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آ کر آپ سے اس کا تذکرہ کیا، تو آپ نے فرمایا:  کہو: «لا إله إلا اللہ وحده لا شريك له له الملك وله الحمد وهو على كل شىء قدير»  اللہ کے سوا کوئی معبود برحق نہیں، وہ تنہا ہے اس کا کوئی شریک نہیں، اسی کے لیے بادشاہت ہے اور اسی کے لیے تعریف ہے اور وہ ہر چیز پر قادر ہے  اور تین بار بائیں طرف تھوک لو اور شیطان سے اللہ کی پناہ طلب کرو اور پھر کبھی ایسا نہ کرنا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3809

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى، ‏‏‏‏‏‏وَمُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الْأَشْعَثِ بْنِ سُلَيْمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مُعَاوِيَةَ بْنِ سُوَيْدِ بْنِ مُقَرِّنٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الْبَرَاءِ بْنِ عَازِبٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَمَرَنَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِسَبْعٍ:‏‏‏‏ أَمَرَنَا بِاتِّبَاعِ الْجَنَائِزِ، ‏‏‏‏‏‏وَعِيَادَةِ الْمَرِيضِ، ‏‏‏‏‏‏وَتَشْمِيتِ الْعَاطِسِ، ‏‏‏‏‏‏وَإِجَابَةِ الدَّاعِي، ‏‏‏‏‏‏وَنَصْرِ الْمَظْلُومِ، ‏‏‏‏‏‏وَإِبْرَارِ الْقَسَمِ، ‏‏‏‏‏‏وَرَدِّ السَّلَامِ .
Al-Bara' bin 'Azib said: The Messenger of Allah commanded us to do seven things: He commanded us to attend funerals, visit the sick, to reply (say: Yarhamuk Allah [may Allah have mercy on you]) to one who sneezes, to accept invitations, to support the oppressed, to fulfill oaths (when adjured by another) and to return greetings of Salaam. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں سات باتوں کا حکم دیا:  آپ نے ہمیں جنازوں کے پیچھے جانے، بیمار کی عیادت کرنے، چھینکنے والے کا جواب دینے، دعوت دینے والے کی دعوت قبول کرنے، مظلوم کی مدد کرنے، قسم پوری کرنے اور سلام کا جواب دینے کا حکم دیا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3810

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي عَدِيٍّ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ سُلَيْمَانَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي السَّلِيلِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ زَهْدَمٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي مُوسَى، ‏‏‏‏‏‏عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ مَا عَلَى الْأَرْضِ يَمِينٌ أَحْلِفُ عَلَيْهَا فَأَرَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا إِلَّا أَتَيْتُهُ .
It was narrated from Abu Musa that the Prophet said: There is nothing on Earth that I swear an oath upon, and I see that something else is better, but I do that which is better. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  زمین پر کوئی ایسی قسم نہیں جو میں کھاؤں پھر اس کے سوا کو اس سے بہتر سمجھوں مگر میں وہی کروں گا   ( جو بہتر ہو گا ) ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3811

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَمَّادٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ غَيْلَانَ بْنِ جَرِيرٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي بُرْدَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي مُوسَى الْأَشْعَرِيِّ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَتَيْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي رَهْطٍ مِنْ الْأَشْعَرِيِّينَ نَسْتَحْمِلُهُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ وَاللَّهِ لَا أَحْمِلُكُمْ وَمَا عِنْدِي مَا أَحْمِلُكُمْ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ لَبِثْنَا مَا شَاءَ اللَّهُ، ‏‏‏‏‏‏فَأُتِيَ بِإِبِلٍ فَأَمَرَ لَنَا بِثَلَاثِ ذَوْدٍ فَلَمَّا انْطَلَقْنَا، ‏‏‏‏‏‏قَالَ بَعْضُنَا لِبَعْضٍ:‏‏‏‏ لَا يُبَارِكُ اللَّهُ لَنَا،‏‏‏‏ أَتَيْنَا رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَسْتَحْمِلُهُ فَحَلَفَ أَنْ لَا يَحْمِلَنَا. قَالَ أَبُو مُوسَى:‏‏‏‏ فَأَتَيْنَا النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَذَكَرْنَا ذَلِكَ لَهُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ مَا أَنَا حَمَلْتُكُمْ بَلِ اللَّهُ حَمَلَكُمْ،‏‏‏‏ إِنِّي وَاللَّهِ لَا أَحْلِفُ عَلَى يَمِينٍ فَأَرَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا إِلَّا كَفَّرْتُ عَنْ يَمِينِي وَأَتَيْتُ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ .
It was narrated that Abu Musa Al-Ash'ari said: I came to the Messenger of Allah with a group of the Ash'ari people and asked him to give us animals to ride. He said: 'By Allah, I cannot give you anything to ride and I have nothing to give you to ride.' We stayed as long as Allah willed, then some camels were brought to him. He ordered that we be given three fine-looking camels. When we left, we said to one another: 'We came to the Messenger of Allah to ask him for animals to ride, and he swore by Allah that he would not give us anything to ride, then he gave us something.' Abu Musa said: We came to the Prophet and told him about that. He said: 'I did not give you animals to ride, rather Allah gave you them to ride. By Allah, I do not swear an oath and then see something better than it, but I offer expiation for my oath and do that which is better.' میں اشعریوں کی ایک جماعت کے ساتھ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آیا، ہم آپ سے سواریاں مانگ رہے تھے۱؎، آپ نے فرمایا:  قسم اللہ کی! میں تمہیں سواریاں نہیں دے سکتا، میرے پاس کوئی سواری ہے بھی نہیں جو میں تمہیں دوں ، پھر ہم جب تک اللہ نے چاہا ٹھہرے رہے، اتنے میں کچھ اونٹ لائے گئے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمارے لیے تین اونٹوں کا حکم دیا، تو جب ہم چلنے لگے تو ہم میں سے ایک نے دوسرے سے کہا: اللہ تعالیٰ ہمیں برکت نہیں دے گا۔ ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس سواریاں طلب کرنے آئے تو آپ نے قسم کھائی کہ آپ ہمیں سواریاں نہیں دیں گے۔ ابوموسیٰ اشعری کہتے ہیں: تو ہم نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آ کر آپ سے اس کا ذکر کیا تو آپ نے فرمایا:  میں نے تمہیں سواریاں نہیں دی ہیں بلکہ اللہ تعالیٰ نے دی ہیں، قسم اللہ کی! میں کسی بات کی قسم کھاتا ہوں، پھر میں اس کے علاوہ کو بہتر سمجھتا ہوں تو میں اپنی قسم کا کفارہ دے دیتا ہوں اور جو بہتر ہوتا ہے کرتا ہوں ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3812

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ الْأَخْنَسِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ شُعَيْبٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْجَدِّهِ:‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ فَرَأَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا فَلْيُكَفِّرْ عَنْ يَمِينِهِ،‏‏‏‏ وَلْيَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ.
Amr bin Shu'aib narrated from his father, from his grandfather, that the Messenger of Allah said: Whoever swears an oath, then sees something better than it, let him do that which is better. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو کوئی قسم کھائے پھر اس کے سوا کو اس سے بہتر سمجھے تو اسے چاہیئے کہ وہ اپنی قسم کا کفارہ دے اور وہی کام انجام دے جو بہتر ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3813

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْمُعْتَمِرُ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ إِذَا حَلَفَ أَحَدُكُمْ عَلَى يَمِينٍ فَرَأَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا،‏‏‏‏ فَلْيُكَفِّرْ عَنْ يَمِينِهِ وَلْيَنْظُرِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ فَلْيَأْتِهِ .
It was narrated from 'Abdur-Rahman bin Samurah that the Messenger of Allah said: If any one of you swears an oath, then he sees something better than it, let him offer expiation for his oath, and look at what is better and do it. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  تم میں سے جب کوئی قسم کھائے پھر اس کے سوا کو اس سے بہتر سمجھے تو چاہیئے کہ اپنی قسم کا کفارہ ادا کرے اور دیکھے کہ کون سی بات بہتر ہے تو وہی کرے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3814

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ سُلَيْمَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَفَّانُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا جَرِيرُ بْنُ حَازِمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ الْحَسَنَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِذَا حَلَفْتَ عَلَى يَمِينٍ فَكَفِّرْ عَنْ يَمِينِكَ ثُمَّ ائْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ .
Abdur-Rahman bin Samurah said: The Messenger of Allah said: 'If you swear an oath, offer expiation for your oath, then do that which is better.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب تم قسم کھاؤ تو اپنی قسم کا کفارہ ادا کرو پھر وہ کام کرو جو بہتر ہو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3815

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ يَحْيَى الْقُطَعِيُّ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ وَذَكَرَ كَلِمَةً مَعْنَاهَا،‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سَعِيدٌ،‏‏‏‏ عَنْ قَتَادَةَ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْعَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ إِذَا حَلَفْتَ عَلَى يَمِينٍ فَرَأَيْتَ غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا فَكَفِّرْ عَنْ يَمِينِكَ وَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ .
It was narrated from 'Abdur-Rahman bin Samurah that the Prophet said: If you swear an oath, then you see something better than it, then offer expiation for your oath, and do that which is better. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب تم کسی بات کی قسم کھاؤ پھر اس کے علاوہ کو اس سے بہتر دیکھو تو اپنی قسم کا کفارہ دے دو اور وہی کرو جو بہتر ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3816

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ،‏‏‏‏ عَنْ عَمْرِو بْنِ مُرَّةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَمْرٍو مَوْلَى الْحَسَنِ بْنِ عَلِيّ يُحَدِّثُ،‏‏‏‏ عَنْ عَدِيِّ بْنِ حَاتِمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ فَرَأَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا فَلْيَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ وَلْيُكَفِّرْ عَنْ يَمِينِهِ .
It was narrated that 'Adiyy bin Hatim said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath, then sees something better than it, let him do that which is better and offer expiation for his oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو کسی بات کی قسم کھائے پھر اس کے علاوہ کو اس سے بہتر پائے تو وہی کرے جو بہتر ہے اور اپنی قسم کا کفارہ ادا کرے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3817

أَخْبَرَنَا هَنَّادُ بْنُ السَّرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي بَكْرِ بْنِ عَيَّاشٍ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الْعَزِيزِ بْنِ رُفَيْعٍ،‏‏‏‏ عَنْ تَمِيمِ بْنِ طَرَفَةَ،‏‏‏‏ عَنْ عَدِيِّ بْنِ حَاتِمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ فَرَأَى غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا،‏‏‏‏ فَلْيَدَعْ يَمِينَهُ وَلْيَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ وَلْيُكَفِّرْهَا .
It was narrated that 'Adiyy bin Hatim said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath, then sees something better than it, let him leave his oath, and do that which is better, and offer expiation for it.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو کسی بات کی قسم کھائے پھر اس کے علاوہ کو اس سے بہتر بات پائے تو اپنی قسم کو ترک کر دے اور وہی کرے جو بہتر ہو، اور قسم کا کفارہ ادا کرے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3818

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ يَزِيدَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا بَهْزُ بْنُ أَسَدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ رُفَيْعٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ تَمِيمَ بْنَ طَرَفَةَ يُحَدِّثُ،‏‏‏‏ عَنْ عَدِيِّ بْنِ حَاتِمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَرَأَى خَيْرًا مِنْهَا فَلْيَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ،‏‏‏‏ وَلْيَتْرُكْ يَمِينَهُ .
It was narrated that 'Adiyy bin Hatim said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath, then sees something better than it, let him do that which is better and leave his oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو کسی بات کی قسم کھائے، پھر اس سے بہتر بات پائے تو وہی کرے جو بہتر ہے اور اپنی قسم کو چھوڑ دے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3819

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ سُفْيَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو الزَّعْرَاءِ،‏‏‏‏ عَنْ عَمِّهِ أَبِي الْأَحْوَصِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ،‏‏‏‏ أَرَأَيْتَ ابْنَ عَمٍّ لِي،‏‏‏‏ أَتَيْتُهُ أَسْأَلُهُ،‏‏‏‏ فَلَا يُعْطِينِي،‏‏‏‏ وَلَا يَصِلُنِي ثُمَّ يَحْتَاجُ إِلَيَّ فَيَأْتِينِي،‏‏‏‏ فَيَسْأَلُنِي وَقَدْ حَلَفْتُ أَنْ لَا أُعْطِيَهُ،‏‏‏‏ وَلَا أَصِلَهُ. فَأَمَرَنِي أَنْ آتِيَ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ،‏‏‏‏ وَأُكَفِّرَ عَنْ يَمِينِي .
It was narrated from Abu Al-Ahwas that his father said: I said: 'O Messenger of Allah, I have a cousin, and I come to him and ask him (for help) but he does not give me anything, and he does not uphold the ties of kinship with me. Then, when he needs me, he comes to me and asks me (for help). I swore that I would not give him anything, nor uphold the ties of kinship with him.' He commanded me to do that which is better and to offer expiation for my oath. میں نے عرض کیا: اللہ کے رسول! کیا آپ نے میرے چچا زاد بھائی کو دیکھا؟ میں اس کے پاس اس سے کچھ مانگنے آتا ہوں تو وہ مجھے نہیں دیتا اور مجھ سے صلہ رحمی نہیں کرتا ہے ۱؎، پھر اسے میری ضرورت پڑتی ہے تو وہ میرے پاس مجھ سے مانگنے آتا ہے، میں نے قسم کھا لی ہے کہ میں نہ اسے دوں گا اور نہ اس سے صلہ رحمی کروں گا، تو آپ نے مجھے حکم دیا کہ میں وہی کروں جو بہتر ہو اور میں اپنی قسم کا کفارہ ادا کر دوں۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3820

أَخْبَرَنَا زِيَادُ بْنُ أَيُّوبَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا هُشَيْمٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا مَنْصُورٌ،‏‏‏‏ وَيُونُسُ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ لِي النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِذَا آلَيْتَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَرَأَيْتَ غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا فَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ،‏‏‏‏ وَكَفِّرْ عَنْ يَمِينِكَ .
It was narrated that 'Abdur-Rahman bin Samurah said: The Prophet said to me: 'If you swear an oath, and you see something that is better, then do that which is better and offer expiation for your oath.' مجھ سے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب تم کسی چیز کی قسم کھاؤ پھر اس کے علاوہ چیز کو اس سے بہتر پاؤ تو وہی کرو جو بہتر ہو اور اپنی قسم کا کفارہ دے دو
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3821

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ عَوْنٍ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ يَعْنِي رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِذَا حَلَفْتَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَرَأَيْتَ غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا،‏‏‏‏ فَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ مِنْهَا،‏‏‏‏ وَكَفِّرْ عَنْ يَمِينِكَ .
Abdur-Rahman bin Samurah said: The Messenger of Allah said: 'If you swear an oath, then you see something that is better, then do that which is better and offer expiation for your oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب تم کسی بات کی قسم کھاؤ پھر اس کے علاوہ بات کو اس سے بہتر پاؤ تو وہی کرو جو بہتر ہو اور اپنی قسم کا کفارہ دے دو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3822

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ قُدَامَةَ فِي حَدِيثِهِ،‏‏‏‏ عَنْ جَرِيرٍ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ الْبَصْرِيِّ،‏‏‏‏ قَالَ عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ سَمُرَةَ:‏‏‏‏ قَالَ لِي رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ إِذَا حَلَفْتَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَرَأَيْتَ غَيْرَهَا خَيْرًا مِنْهَا،‏‏‏‏ فَأْتِ الَّذِي هُوَ خَيْرٌ،‏‏‏‏ وَكَفِّرْ عَنْ يَمِينِكَ .
Abdur-Rahman bin Samurah said: The Messenger of Allah said to me: 'If you swear an oath, then you see something that is better, do that which is better, and offer expiation for your oath.' مجھ سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب تم کسی بات کی قسم کھاؤ پھر اس کے علاوہ بات کو اس سے بہتر پاؤ تو وہی کرو جو بہتر ہے اور اپنی قسم کا کفارہ دے دو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3823

أَخْبَرَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ مُحَمَّدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ الْأَخْنَسِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي عَمْرُو بْنُ شُعَيْبٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ جَدِّهِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ وَلَا يَمِينَ فِيمَا لَا تَمْلِكُ،‏‏‏‏ وَلَا فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَلَا قَطِيعَةِ رَحِمٍ .
Amr bin Shu'aib narrated from his father, from his grandfather, that the Messenger of Allah said: There is no vow and no oath concerning that which one does not possess, nor to commit sin, nor to sever the ties of kinship. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اس چیز میں کوئی نذر، اور کوئی قسم نہیں ہوتی، جس کے تم مالک نہیں ہو اور نہ ہی معصیت اور قطع رحمی میں قسم ہے  ۱؎
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3824

أَخْبَرَنِي أَحْمَدُ بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَبَّانُ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَارِثِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَيُّوبُ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ فَاسْتَثْنَى،‏‏‏‏ فَإِنْ شَاءَ مَضَى،‏‏‏‏ وَإِنْ شَاءَ تَرَكَ غَيْرَ حَنِثٍ .
It was narrated from Ibn 'Umar that the Prophet said: Whoever swears an oath and says: 'If Allah wills', then if he wishes he may go ahead, and if he wishes he may not, without having broken his oath. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو قسم کھائے اور ان شاءاللہ  ( اگر اللہ نے چاہا )  کہے تو اگر چاہے تو وہ قسم پوری کرے اور اگر چاہے تو پوری نہ کرے، وہ قسم توڑنے والا نہیں ہو گا ۱؎ ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3825

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ إِبْرَاهِيمَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ حَيَّانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ إِبْرَاهِيمَ،‏‏‏‏ عَنْعَلْقَمَةَ بْنِ وَقَّاصٍ،‏‏‏‏ عَنْ عُمَرَ بْنِ الْخَطَّابِ،‏‏‏‏ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّمَا الْأَعْمَالُ بِالنِّيَّةِ،‏‏‏‏ وَإِنَّمَا لِامْرِئٍ مَا نَوَى،‏‏‏‏ فَمَنْ كَانَتْ هِجْرَتُهُ إِلَى اللَّهِ وَرَسُولِهِ فَهِجْرَتُهُ إِلَى اللَّهِ وَرَسُولِهِ،‏‏‏‏ وَمَنْ كَانَتْ هِجْرَتُهُ لِدُنْيَا يُصِيبُهَا أَوِ امْرَأَةٍ يَتَزَوَّجُهَا فَهِجْرَتُهُ إِلَى مَا هَاجَرَ إِلَيْهِ .
It was narrated from 'Umar bin Al-Khattab that the Prophet said: Actions are but by intentions, and each person will have but that which he intended. Thus, he whose emigration was for the sake of Allah and His Messenger, his emigration was for the sake of Allah and His Messenger, and he whose emigration was to achieve some worldly gain or to take some woman in marriage, his emigration was for that for which he emigrated. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اعمال کا دارومدار نیت پر ہے اور آدمی کو اسی کا ثواب ملے گا جس کی اس نے نیت کی ہو، تو جس شخص کی ہجرت اللہ اور اس کے رسول کے لیے ہو گی تو اس کی ہجرت اللہ اور اس کے رسول کے لیے ہو گی اور جس کی ہجرت دنیا حاصل کرنے یا کسی عورت سے شادی کرنے کے لیے ہو گی تو اس کی ہجرت اسی کی طرف ہو گی جس کی خاطر اس نے ہجرت کی ہے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3826

أَخْبَرَنَا الْحَسَنُ بْنُ مُحَمَّدٍ الزَّعْفَرَانِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَجَّاجٌ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ جُرَيْجٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ زَعَمَ عَطَاءٌ،‏‏‏‏ أَنَّهُ سَمِعَ عُبَيْدَ بْنَ عُمَيْرٍ،‏‏‏‏ يَقُولُ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عَائِشَةَ تَزْعُمُ:‏‏‏‏ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ كَانَ يَمْكُثُ عِنْدَ زَيْنَبَ بِنْتِ جَحْشٍ،‏‏‏‏ فَيَشْرَبُ عِنْدَهَا عَسَلًا،‏‏‏‏ فَتَوَاصَيْتُ أَنَا وَحَفْصَةُ أَنَّ أَيَّتُنَا دَخَلَ عَلَيْهَا النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَلْتَقُلْ:‏‏‏‏ إِنِّي أَجِدُ مِنْكَ رِيحَ مَغَافِيرَ،‏‏‏‏ أَكَلْتَ مَغَافِيرَ ؟ فَدَخَلَ عَلَى إِحْدَاهُمَا،‏‏‏‏ فَقَالَتْ ذَلِكَ لَهُ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ لَا،‏‏‏‏ بَلْ شَرِبْتُ عَسَلًا عِنْدَ زَيْنَبَ بِنْتِ جَحْشٍ،‏‏‏‏ وَلَنْ أَعُودَ لَهُ ،‏‏‏‏ فَنَزَلَتْ:‏‏‏‏ يَأَيُّهَا النَّبِيُّ لِمَ تُحَرِّمُ مَا أَحَلَّ اللَّهُ لَكَ إِلَى إِنْ تَتُوبَا إِلَى اللَّهِ سورة التحريم آية 1 - 4 عَائِشَةُ،‏‏‏‏ وَحَفْصَةُ وَإِذْ أَسَرَّ النَّبِيُّ إِلَى بَعْضِ أَزْوَاجِهِ حَدِيثًا سورة التحريم آية 3،‏‏‏‏ لِقَوْلِهِ:‏‏‏‏ بَلْ شَرِبْتُ عَسَلًا .
Ubaid bin 'Umair said: I heard 'Aishah say: The Prophet used to stay with Zainab bint Jahsh and drink honey at her house. Hafsah and I agreed that if the Prophet came to either of us, she would say: 'I detect the smell of Maghafir (a nasty-smelling gum) on you. Have you eaten Maghafir?' He went to one of them and she said that to him. He said: 'No, rather I drank honey at the house of Zainab bint Jahsh, but I will never do it again.' Then the following was revealed: 'O Prophet! Why do you forbid (for yourself) that which Allah has allowed to you' up to: 'If you two turn in repentance to Allah' -'Aishah and Hafsah- 'And (remember) when the Prophet disclosed a matter in confidence to one of his wives.' refers to him saying: 'No, rather I drank honey.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ام المؤمنین زینب بنت جحش رضی اللہ عنہا کے پاس ٹھہرتے اور ان کے پاس شہد پیتے تھے، میں نے اور حفصہ نے آپس میں مشورہ کیا کہ ہم میں سے جس کے پاس نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم آئیں تو وہ کہے: مجھے آپ  ( کے منہ )  سے مغافیر ۱؎ کی بو محسوس ہو رہی ہے، آپ نے مغافیر کھائی ہے۔ آپ ان دونوں میں سے ایک کے پاس گئے تو اس نے آپ سے یہی کہا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  نہیں، میں نے تو زینب بنت جحش کے پاس شہد پیا ہے اور آئندہ اسے نہیں پیوں گا ۔ تو آیت کریمہ «يا أيها النبي لم تحرم ما أحل اللہ لك» سے  ( آیت کا سیاق یہ ہے کہ )   اے نبی جس چیز کو اللہ تعالیٰ نے حلال کر دیا ہے اسے آپ کیوں حرام کرتے ہیں   ( التحریم: ۱ )  «‏إن تتوبا إلى اللہ»  ( آیت کا سیاق یہ ہے کہ )   ( اے نبی کی بیویو! )  اگر تم دونوں اللہ تعالیٰ کے سامنے توبہ کر لو  ( تو بہتر ہے )   ( التحریم: ۴ )  تک نازل ہوئی، اس سے عائشہ اور حفصہ رضی اللہ عنہما مراد ہیں اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے قول: میں نے تو شہد پیا ہے  ( مگر اب نہیں پیوں گا )  کی وجہ سے آیت کریمہ «وإذ أسر النبي إلى بعض أزواجه حديثا»  جب نبی نے اپنی بعض عورتوں سے چپکے سے ایک بات کہی   ( التحریم: ۳ )  نازل ہوئی۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3827

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْمُثَنَّى بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا طَلْحَةُ بْنُ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ جَابِرٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ دَخَلْتُ مَعَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بَيْتَهُ،‏‏‏‏ فَإِذَا فِلَقٌ وَخَلٌّ،‏‏‏‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ كُلْ فَنِعْمَ الْإِدَامُ الْخَلُّ .
It was narrated that Jabir said: I entered the house of the Prophet with him and there was some bread and vinegar. The Messenger of Allah said: 'Eat; what a good condiment is vinegar.' میں نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ آپ کے گھر میں گیا تو کیا دیکھتا ہوں کہ روٹی کا ایک ٹکڑا اور سرکہ ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  کھاؤ، سرکہ کیا ہی بہترین سالن ہے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3828

أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الْمَلِكِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي وَائِلٍ،‏‏‏‏ عَنْ قَيْسِ بْنِ أَبِي غَرَزَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا نُسَمَّى السَّمَاسِرَةَ،‏‏‏‏ فَأَتَانَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَنَحْنُ نَبِيعُ،‏‏‏‏ فَسَمَّانَا بِاسْمٍ هُوَ خَيْرٌ مِنَ اسْمِنَا،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ يَا مَعْشَرَ التُّجَّارِ،‏‏‏‏ إِنَّ هَذَا الْبَيْعَ يَحْضُرُهُ الْحَلِفُ،‏‏‏‏ وَالْكَذِبُ،‏‏‏‏ فَشُوبُوا بَيْعَكُمْ بِالصَّدَقَةِ .
It was narrated that Qais bin Abi Gharazah said: At the time of the Messenger of Allah we used to be called Samasir (brokers). The Messenger of Allah came to us when we were selling and called us by a name that was better than that. He said: 'O merchants (Tujjar), this selling involves lies and (false) oaths, so mix some charity with it.' کہ ہمیں «سماسر»  ( دلال )  کہا جاتا تھا، ایک مرتبہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ہمارے پاس آئے اور ہم خرید و فروخت کر رہے تھے تو آپ نے ہمیں ہمارے نام سے بہتر ایک نام دیا، آپ نے فرمایا:  اے تاجروں کی جماعت! خرید و فروخت میں قسم اور جھوٹ ۱؎ بھی شامل ہو جاتی ہیں تو تم اپنی خرید و فروخت میں صدقہ ملا لیا کرو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3829

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ يَزِيدَ،‏‏‏‏ عَنْ سُفْيَانَ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الْمَلِكِ،‏‏‏‏ وَعَاصِمٌ،‏‏‏‏ وَجَامِعٌ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي وَائِلٍ،‏‏‏‏ عَنْ قَيْسِ بْنِ أَبِي غَرَزَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا نَبِيعُ بِالْبَقِيعِ،‏‏‏‏ فَأَتَانَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ وَكُنَّا نُسَمَّى السَّمَاسِرَةَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ يَا مَعْشَرَ التُّجَّارِ ،‏‏‏‏ فَسَمَّانَا بِاسْمٍ هُوَ خَيْرٌ مِنِ اسْمِنَا،‏‏‏‏ ثُمَّ قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ هَذَا الْبَيْعَ يَحْضُرُهُ الْحَلِفُ،‏‏‏‏ وَالْكَذِبُ،‏‏‏‏ فَشُوبُوهُ بِالصَّدَقَةِ .
It was narrated that Qais bin Abi Gharazah said: We used to sell in Al-Baqi, and the Messenger of Allah came to us. We used to be called Samasir (brokers) but he said: 'O merchants!' And called us by a name that was better than our name. Then he said: 'This selling involves (false) oaths and lies, so mix some charity with it.' ہم لوگ بقیع میں خرید و فروخت کرتے تھے، تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ہمارے پاس آئے، ہم لوگوں کو«سماسرہ»  ( دلال )  کہا جاتا تھا، تو آپ نے فرمایا:  اے تاجروں کی جماعت!  آپ نے ہمیں ایک ایسا نام دیا جو ہمارے نام سے بہتر تھا، پھر فرمایا:  خرید و فروخت میں  ( بغیر قصد و ارادے کے )  قسم اور جھوٹ کی باتیں شامل ہو جاتی ہیں تو اس میں صدقہ ملا لیا کرو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3830

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ جَعْفَرٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ،‏‏‏‏ عَنْ مُغِيرَةَ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي وَائِلٍ،‏‏‏‏ عَنْ قَيْسِ بْنِ أَبِي غَرَزَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَتَانَا النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ وَنَحْنُ فِي السُّوقِ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ هَذِهِ السُّوقَ يُخَالِطُهَا اللَّغْوُ وَالْكَذِبُ،‏‏‏‏ فَشُوبُوهَا بِالصَّدَقَةِ.
It was narrated that Qais bin Abi Gharazah said: The Prophet came to us when we were in the marketplace and said: 'This marketplace is filled with idle talk and (false) oaths, so mix some charity with it.' ہم لوگ بازار میں تھے کہ ہمارے پاس نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم آئے اور فرمایا:  ان بازاروں میں  ( بغیر قصد و ارادے کے )  غلط اور جھوٹی باتیں آ ہی جاتی ہیں، لہٰذا تم اس میں صدقہ ملا لیا کرو  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3831

أَخْبَرَنَا عَلِيُّ بْنُ حُجْرٍ،‏‏‏‏ وَمُحَمَّدُ بْنُ قُدَامَةَ،‏‏‏‏ قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا جَرِيرٌ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي وَائِلٍ،‏‏‏‏ عَنْ قَيْسِ بْنِ أَبِي غَرَزَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا بِالْمَدِينَةِ،‏‏‏‏ نَبِيعُ الْأَوْسَاقَ وَنَبْتَاعُهَا،‏‏‏‏ وَكُنَّا نُسَمِّي أَنْفُسَنَا السَّمَاسِرَةَ،‏‏‏‏ وَيُسَمِّينَا النَّاسُ،‏‏‏‏ فَخَرَجَ إِلَيْنَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ذَاتَ يَوْمٍ،‏‏‏‏ فَسَمَّانَا بِاسْمٍ هُوَ خَيْرٌ مِنَ الَّذِي سَمَّيْنَا أَنْفُسَنَا،‏‏‏‏ وَسَمَّانَا النَّاسُ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ يَا مَعْشَرَ التُّجَّارِ،‏‏‏‏ إِنَّهُ يَشْهَدُ بَيْعَكُمُ الْحَلِفُ وَالْكَذِبُ،‏‏‏‏ فَشُوبُوهُ بِالصَّدَقَةِ.
It was narrated that Qais bin Abi Gharazah said: In Al-Madinah we used to buy and sell Wasqs (of goods), and we used to call ourselves Samasir (brokers), and the people used to call us like that. The Messenger of Allah came out to us one day, and called us by a name that was better than that which we called ourselves and which the people called us. He said: 'O Tujjar (traders), your selling involves (false) oaths and lies, so mix some charity with it.' ہم لوگ مدینے میں وسق بیچتے اور خریدتے تھے، اور ہم اپنے کو «سماسرہ»  ( دلال )  کہتے تھے، لوگ بھی ہمیں دلال کہتے تھے۔ ایک دن رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ہماری طرف نکل کر آئے تو آپ نے ہمیں ایک ایسا نام دیا جو اس نام سے بہتر تھا جو ہم اپنے لیے کہتے تھے یا لوگ ہمیں اس نام سے پکارتے تھے، آپ نے فرمایا:  اے تاجروں کی جماعت! تمہاری خرید و فروخت میں  ( بلا قصد و ارادے کے )  قسم اور جھوٹ کی باتیں بھی آ جاتی ہیں تو تم اس میں صدقہ ملا لیا کرو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3832

أَخْبَرَنَا إِسْمَاعِيل بْنُ مَسْعُودٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَالِدٌ،‏‏‏‏ عَنْ شُعْبَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي مَنْصُورٌ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مُرَّةَ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَهَى عَنِ النَّذْرِ،‏‏‏‏ وَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّهُ لَا يَأْتِي بِخَيْرٍ،‏‏‏‏ إِنَّمَا يُسْتَخْرَجُ بِهِ مِنَ الْبَخِيلِ .
It was narrated from 'Abdullah bin 'Umar that the Messenger of Allah forbade vows and said: They do not bring any good; they are just a means of taking wealth from the miserly. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے نذر  ( ماننے )  سے منع کیا اور فرمایا:  اس سے کوئی بھلائی حاصل نہیں ہوتی، البتہ اس سے بخیل سے  ( کچھ مال )  نکال لیا جاتا ہے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3833

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مُرَّةَ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنِ النَّذْرِ،‏‏‏‏ وَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّهُ لَا يَرُدُّ شَيْئًا،‏‏‏‏ إِنَّمَا يُسْتَخْرَجُ بِهِ مِنَ الشَّحِيحِ .
It was narrated that 'Abdullah bin 'Umar said: The Messenger of Allah forbade vows and said: 'They do not change anything; they are just a means of taking wealth from the miserly.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے نذر ماننے سے منع کیا اور فرمایا:  اس سے کوئی چیز رد نہیں ہوتی، البتہ اس سے بخیل سے ( کچھ مال )  نکال لیا جاتا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3834

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مُرَّةَ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ النَّذْرُ لَا يُقَدِّمُ شَيْئًا وَلَا يُؤَخِّرُهُ،‏‏‏‏ إِنَّمَا هُوَ شَيْءٌ يُسْتَخْرَجُ بِهِ مِنَ الشَّحِيحِ .
It was narrated that Ibn 'Umar said: The Messenger of Allah said: 'A vow does not bring anything forward or put it back; it is just a means of taking wealth from the miserly.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  نذر نہ کسی  ( مقدر )  چیز کو آگے کرتی ہے نہ پیچھے، البتہ یہ ایک ایسی چیز ہے جس سے بخیل سے  ( کچھ مال )  نکال لیا جاتا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3835

أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ،‏‏‏‏ عَنِ الْأَعْرَجِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا يَأْتِي النَّذْرُ عَلَى ابْنِ آدَمَ شَيْئًا لَمْ أُقَدِّرْهُ عَلَيْهِ،‏‏‏‏ وَلَكِنَّهُ شَيْءٌ اسْتُخْرِجَ بِهِ مِنَ الْبَخِيلِ .
It was narrated from Abu Hurairah that the Messenger of Allah said: A vow does not bring anything to the son of Adam that has not been decreed for him. It is just a means of taking wealth from the miserly. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  ( اللہ تعالیٰ فرماتا ہے )  نذر ابن آدم کے پاس کوئی ایسی چیز نہیں لا سکتی جسے میں نے اس کے لیے مقدر نہ کیا ہو، البتہ یہ ایک ایسی چیز ہے جس سے بخیل سے  ( کچھ مال )  نکال لیا جاتا ہے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3836

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ،‏‏‏‏ عَنْ الْعَلَاءِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا تَنْذِرُوا فَإِنَّ النَّذْرَ لَا يُغْنِي مِنَ الْقَدَرِ شَيْئًا،‏‏‏‏ وَإِنَّمَا يُسْتَخْرَجُ بِهِ مِنَ الْبَخِيلِ .
It was narrated from Abu Hurairah that the Prophet said: Do not make vows, for a vow does not have any impact on the Qadar. Rather it is just a means of taking wealth from the miserly. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  نذر نہ مانو، کیونکہ نذر تقدیر  ( کے لکھے )  میں کچھ کام نہیں آتی، اس سے تو صرف بخیل سے کچھ نکلوایا جاتا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3837

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ،‏‏‏‏ عَنْ مَالِكٍ،‏‏‏‏ عَنْ طَلْحَةَ بْنِ عَبْدِ الْمَلِكِ،‏‏‏‏ عَنْ الْقَاسِمِ،‏‏‏‏ عَنْ عَائِشَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ نَذَرَ أَنْ يُطِيعَ اللَّهَ فَلْيُطِعْهُ،‏‏‏‏ وَمَنْ نَذَرَ أَنْ يَعْصِيَ اللَّهَ فَلَا يَعْصِهِ .
It was narrated from 'Aishah that the Messenger of Allah said: Whoever vows to obey Allah, let him obey Him, and whoever vows to disobey Allah, let him not disobey Him. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو اللہ کی اطاعت و فرماں برداری کی نذر مانے تو اسے چاہیئے کہ وہ اس کی اطاعت کرے، اور جو اللہ کی نافرمانی کرنے کی نذر مانے تو اس کی نافرمانی نہ کرے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3838

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مَالِكٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي طَلْحَةُ بْنُ عَبْدِ الْمَلِكِ عَنْ الْقَاسِمِ،‏‏‏‏ عَنْعَائِشَةَ،‏‏‏‏ قَالَتْ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ:‏‏‏‏ مَنْ نَذَرَ أَنْ يُطِيعَ اللَّهَ فَلْيُطِعْهُ،‏‏‏‏ وَمَنْ نَذَرَ أَنْ يَعْصِيَ اللَّهَ فَلَا يَعْصِهِ .
It was narrated that 'Aishah said: I heard the Messenger of Allah say: 'Whoever vows to obey Allah, let him obey Him, and whoever vows to disobey Allah, let him not disobey Him.' میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے سنا:  جو اللہ تعالیٰ کی اطاعت و فرماں برداری کی نذر مانے تو اسے چاہیئے کہ وہ اس کی اطاعت کرے، اور جو اللہ تعالیٰ کی نافرمانی کی نذر مانے گا تو وہ اس کی نافرمانی نہ کرے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3839

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْعَلَاءِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ إِدْرِيسَ،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ،‏‏‏‏ عَنْ طَلْحَةَ بْنِ عَبْدِ الْمَلِكِ،‏‏‏‏ عَنْ الْقَاسِمِ،‏‏‏‏ عَنْعَائِشَةَ،‏‏‏‏ قَالَتْ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ:‏‏‏‏ مَنْ نَذَرَ أَنْ يُطِيعَ اللَّهَ فَلْيُطِعْهُ،‏‏‏‏ وَمَنْ نَذَرَ أَنْ يَعْصِيَ اللَّهَ فَلَا يَعْصِهِ.
It was narrated that 'Aishah said: I heard the Messenger of Allah say: 'Whoever vows to obey Allah, let him obey Him, and whoever vows to disobey Allah, let him not disobey Him.' میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے سنا:  جو نذر مانے کہ وہ اللہ تعالیٰ کی اطاعت و فرماں برداری کرے گا تو اسے چاہیئے کہ وہ اللہ تعالیٰ کی اطاعت کرے، اور جو اللہ کی نافرمانی کی نذر مانے تو وہ اس کی نافرمانی نہ کرے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3840

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَالِدٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي جَمْرَةَ،‏‏‏‏ عَنْ زَهْدَمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عِمْرَانَ بْنَ حُصَيْنٍ يَذْكُرُ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ خَيْرُكُمْ قَرْنِي،‏‏‏‏ ثُمَّ الَّذِينَ يَلُونَهُمْ،‏‏‏‏ ثُمَّ الَّذِينَ يَلُونَهُمْ،‏‏‏‏ ثُمَّ الَّذِينَ يَلُونَهُمْ ،‏‏‏‏ فَلَا أَدْرِي أَذَكَرَ مَرَّتَيْنِ بَعْدَهُ أَوْ ثَلَاثًا،‏‏‏‏ ثُمَّ ذَكَرَ:‏‏‏‏ قَوْمًا يَخُونُونَ وَلَا يُؤْتَمَنُونَ،‏‏‏‏ وَيَشْهَدُونَ وَلَا يُسْتَشْهَدُونَ،‏‏‏‏ وَيُنْذِرُونَ وَلَا يُوفُونَ،‏‏‏‏ وَيَظْهَرُ فِيهِمُ السِّمَنُ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ هَذَا نَصْرُ بْنُ عِمْرَانَ أَبُو جَمْرَةَ.
Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: 'The best of you are my generation, then those who come after them, then those whom after them, then those who come after them.' -I do not know if he said two times after him or three. Then he mentioned some people who betray and cannot be trusted, who bear witness without being asked to do so, who make vows and do not fulfill them, and fatness will prevail among them. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  تم میں سے زیادہ اچھے اور بہتر لوگ وہ ہیں جو میرے زمانے کے ہیں، پھر وہ جو ان کے بعد کے ہیں، پھر وہ جو ان کے بعد کے ہیں، پھر وہ جو ان کے بعد کے ہیں ، مجھے نہیں معلوم کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے «ثم الذين يلونهم» کا ذکر دو بار کیا یا تین بار، پھر آپ نے ان لوگوں کا ذکر کیا جو خیانت کریں گے اور انہیں امین  ( امانت دار )  نہیں سمجھا جائے گا، گواہی دیں گے حالانکہ ان سے گواہی نہیں مانگی جائے گی اور نذر مانیں گے اور اسے پورا نہیں کریں گے اور ان لوگوں میں موٹاپا ظاہر ہو گا  ۱؎۔ ابوعبدالرحمٰن نسائی کہتے ہیں: یہ ابوجمرہ نصر بن عمران ہیں۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3841

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَالِدٌ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ جُرَيْجٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي سُلَيْمَانُ الْأَحْوَلُ،‏‏‏‏ عَنْ طَاوُسٍ،‏‏‏‏ عَنِابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ مَرَّ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِرَجُلٍ يَقُودُ رَجُلًا فِي قَرَنٍ،‏‏‏‏ فَتَنَاوَلَهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَقَطَعَهُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّهُ نَذْرٌ.
It was narrated that Ibn 'Abbas said: The Messenger of Allah passed by a man who was leading another man by a rope. The Prophet took it, and cut it, and he said: 'It is a vow.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ایک ایسے شخص کے پاس سے گزرے جو ایک آدمی کو رسی میں باندھ کر کھینچے لے جا رہا تھا، آپ نے رسی کو لیا اور اسے کاٹ ڈالا اور فرمایا:  یہ نذر ہے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3842

أَخْبَرَنَا يُوسُفُ بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَجَّاجٌ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ جُرَيْجٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي سُلَيْمَانُ الْأَحْوَلُ،‏‏‏‏ أَنَّ طَاوُسًا أَخْبَرَهُ،‏‏‏‏ عَنِابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مَرَّ بِرَجُلٍ وَهُوَ يَطُوفُ بِالْكَعْبَةِ يَقُودُهُ إِنْسَانٌ بِخِزَامَةٍ فِي أَنْفِهِ،‏‏‏‏ فَقَطَعَهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِيَدِهِ،‏‏‏‏ ثُمَّ أَمَرَهُ أَنْ يَقُودَهُ بِيَدِهِ . (حديث مرفوع) (حديث موقوف) قَالَ قَالَ ابْنُ جُرَيْجٍ،‏‏‏‏ وَأَخْبَرَنِي سُلَيْمَانُ،‏‏‏‏ أَنَّ طَاوُسًا أَخْبَرَهُ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مَرَّ بِهِ وَهُوَ يَطُوفُ بِالْكَعْبَةِ،‏‏‏‏ وَإِنْسَانٌ قَدْ رَبَطَ يَدَهُ بِإِنْسَانٍ آخَرَ بِسَيْرٍ أَوْ خَيْطٍ أَوْ بِشَيْءٍ غَيْرِ ذَلِكَ،‏‏‏‏ فَقَطَعَهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِيَدِهِ،‏‏‏‏ ثُمَّ قَالَ:‏‏‏‏ قُدْهُ بِيَدِكَ .
It was narrated from Ibn 'Abbas: The Prophet passed by a man who was circumambulating the Ka'bah, led by another man with a reign in his nose. The Prophet took him by the hand and commanded him to lead him by his hand. Ibn Juraij said: Sulaiman told me that Tawus told him, from Ibn 'Abbas, that the Prophet passed by him when he was circumambulating the Ka'bah, and a man had tied his hand to another man with some string or thread or whatever. The Prophet cut it with his hand then said: 'Lead him with your hand.' نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ایک آدمی کے پاس سے گزرے جو کعبے کا طواف کر رہا تھا، اور ایک آدمی اس کی ناک میں نکیل ڈال کر اسے کھینچ رہا تھا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اسے اپنے ہاتھ سے کاٹ دیا پھر حکم دیا کہ وہ اسے اپنے ہاتھ سے پکڑ کر لے جائے۔ ابن عباس رضی اللہ عنہما کہتے ہیں: نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم اس  ( آدمی )  کے پاس سے گزرے، وہ کعبے کا طواف کر رہا تھا اور اس نے ایک آدمی کا ہاتھ ایک دوسرے آدمی سے تسمے سے یا دھاگے سے یا کسی اور چیز سے باندھ رکھا تھا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے ہاتھ سے اسے کاٹ ڈالا اور فرمایا:  اسے اپنے ہاتھ سے پکڑ کر لے جاؤ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3843

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَيُّوبُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو قِلَابَةَ،‏‏‏‏ عَنْ عَمِّهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةِ اللَّهِ،‏‏‏‏ وَلَا فِيمَا لَا يَمْلِكُ ابْنُ آدَمَ .
It was narrated from 'Imran bin Husain that the Prophet said: There is no vow to commit an act of disobedience, and no vow concerning that which the son of Adam does not possess. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اللہ کی نافرمانی میں نذر نہیں، اور نہ ہی کسی ایسی چیز میں ہے جس کا ابن آدم مالک نہ ہو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3844

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو الْمُغِيرَةِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْأَوْزَاعِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي يَحْيَى،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي قِلَابَةَ،‏‏‏‏ عَنْثَابِتِ بْنِ الضَّحَّاكِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ بِمِلَّةٍ سِوَى مِلَّةِ الْإِسْلَامِ كَاذِبًا فَهُوَ كَمَا قَالَ،‏‏‏‏ وَمَنْ قَتَلَ نَفْسَهُ بِشَيْءٍ فِي الدُّنْيَا عُذِّبَ بِهِ يَوْمَ الْقِيَامَةِ،‏‏‏‏ وَلَيْسَ عَلَى رَجُلٍ نَذْرٌ فِيمَا لَا يَمْلِكُ .
It was narrated from Thabit bin Ad-Dahhak, that the Messenger of Allah said: Whoever swears by a religion other than Islam, telling a lie, will be as he said, and whoever kills himself with something, he will be punished with it in the Hereafter, and there is no vow concerning that which a man does not possess. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو کوئی دین اسلام کے سوا کسی دوسری ملت کی جھوٹی قسم کھائے گا تو وہ اسی طرح ہو گا جیسے اس نے کہا، اور جس نے اپنے آپ کو دنیا میں کسی چیز سے قتل کیا تو اسے قیامت کے دن اسی چیز سے عذاب دیا جائے گا، اور آدمی پر اس چیز کی نذر نہیں جس کا وہ مالک نہ ہو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3845

أَخْبَرَنِي يُوسُفُ بْنُُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَجَّاجٌ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ جُرَيْجٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي سَعِيدُ بْنُ أَبِي أَيُّوبَ،‏‏‏‏ عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِي حَبِيبٍ أَخْبَرَهُ،‏‏‏‏ أَنَّ أَبَا الْخَيْرِ حَدَّثَهُ،‏‏‏‏ عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ نَذَرَتْ أُخْتِي أَنْ تَمْشِيَ إِلَى بَيْتِ اللَّهِ،‏‏‏‏ فَأَمَرَتْنِي أَنْ أَسْتَفْتِيَ لَهَا رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَاسْتَفْتَيْتُ لَهَا النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ لِتَمْشِ،‏‏‏‏ وَلْتَرْكَبْ .
It was narrated that 'Uqbah bin 'Amir said: My sister vowed to walk to the House of Allah, and she told me to ask the Messenger of Allah about that. So I asked the Prophet for her and he said: 'Let her walk, and let her ride.' میری بہن نے نذر مانی کہ وہ بیت اللہ پیدل جائے گی، اس نے مجھے حکم دیا کہ میں اس کے لیے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے اس بارے میں مسئلہ پوچھوں، میں نے اس کے لیے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے مسئلہ پوچھا تو آپ نے فرمایا:  وہ پیدل جائے اور سوار ہو کر  ( بھی )  جائے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3846

أَخْبَرَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ وَمُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى،‏‏‏‏ قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ عَنْ يَحْيَى بْنِ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ زَحْرٍ،‏‏‏‏ وَقَالَ عَمْرٌو:‏‏‏‏ إِنَّ عُبَيْدَ اللَّهِ بْنَ زَحْرٍ أَخْبَرَهُ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مَالِكٍ،‏‏‏‏ أَنَّ عُقْبَةَ بْنَ عَامِرٍ أَخْبَرَهُ،‏‏‏‏ أَنَّهُ سَأَلَ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنْ أُخْتٍ لَهُ نَذَرَتْ أَنْ تَمْشِيَ حَافِيَةً غَيْرَ مُخْتَمِرَةٍ،‏‏‏‏ فَقَالَ لَهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مُرْهَا فَلْتَخْتَمِرْ،‏‏‏‏ وَلْتَرْكَبْ،‏‏‏‏ وَلْتَصُمْ ثَلَاثَةَ أَيَّامٍ .
Uqbah bin 'Amir narrated that he asked the Prophet about a sister of his who had vowed to walk, barefoot and bareheaded. The Prophet said to him: Tell her to cover her head and ride, and fast for three days. انہوں نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے اپنی ایک بہن کے بارے میں پوچھا جس نے نذر مانی تھی کہ وہ دوپٹہ اوڑھے بغیر پیدل  ( حج کرنے )  جائے گی۔ تو نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ان سے فرمایا:  اسے حکم دو کہ وہ اوڑھنی اوڑھ کر اور سوار ہو کر جائے اور تین دن کے روزے رکھ لے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3847

أَخْبَرَنَا بِشْرُ بْنُ خَالِدٍ الْعَسْكَرِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ جَعْفَرٍ،‏‏‏‏ عَنْ شُعْبَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ سُلَيْمَانَ يُحَدِّثُ،‏‏‏‏ عَنْ مُسْلِمٍ الْبَطِينِ،‏‏‏‏ عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ رَكِبَتِ امْرَأَةٌ الْبَحْرَ فَنَذَرَتْ أَنْ تَصُومَ شَهْرًا،‏‏‏‏ فَمَاتَتْ قَبْلَ أَنْ تَصُومَ،‏‏‏‏ فَأَتَتْ أُخْتُهَا النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ وَذَكَرَتْ ذَلِكَ لَهُ،‏‏‏‏ فَأَمَرَهَا أَنْ تَصُومَ عَنْهَا .
It was narrated that Ibn 'Abbas said: A woman traveled by sea and vowed to fast for a month, but she died before she could fast. Her sister came to the Prophet and told him about that, and he told her to fast on her behalf. ایک عورت نے سمندر کا سفر کیا اور نذر مانی کہ وہ ایک مہینہ روزے رکھے گی پھر وہ روزے رکھنے سے پہلے ہی مر گئی تو اس کی بہن نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آ کر آپ سے اس کا ذکر کیا تو آپ نے اسے حکم دیا کہ  وہ اس کی طرف سے روزے رکھے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3848

أَخْبَرَنَا عَلِيُّ بْنُ حُجْرٍ،‏‏‏‏ وَالْحَارِثُ بْنُ مِسْكِينٍ قِرَاءَةً عَلَيْهِ وَأَنَا أَسْمَعُ وَاللَّفْظُ لَهُ،‏‏‏‏ عَنْ سُفْيَانَ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ أَنَّ سَعْدَ بْنَ عُبَادَةَ،‏‏‏‏ اسْتَفْتَى رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي نَذْرٍ كَانَ عَلَى أُمِّهِ تُوُفِّيَتْ قَبْلَ أَنْ تَقْضِيَهُ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ اقْضِهِ عَنْهَا .
It was narrated from Ibn 'Abbas that Sa'd bin 'Ubadah asked the Messenger of Allah about a vow which his mother had sworn, but she died before she could fulfill it. He said: Fulfill it on her behalf. سعد بن عبادہ رضی اللہ عنہ نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے اس نذر کے متعلق مسئلہ پوچھا جو ان کی ماں کے ذمہ تھی اور اسے پوری کرنے سے پہلے ہی ان کا انتقال ہو چکا تھا تو آپ نے فرمایا:  ان کی طرف سے تم اسے پوری کرو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3849

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا اللَّيْثُ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ اسْتَفْتَى سَعْدُ بْنُ عُبَادَةَ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي نَذْرٍ كَانَ عَلَى أُمِّهِ،‏‏‏‏ فَتُوُفِّيَتْ قَبْلَ أَنْ تَقْضِيَهُ،‏‏‏‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ اقْضِهِ عَنْهَا .
It was narrated that Ibn 'Abbas said: Sa'd bin 'Ubadah asked the Messenger of Allah about a vow which his mother had sworn, but she died before she could fulfill it. The Messenger of Allah said: 'Fulfill it on her behalf.' سعد بن عبادہ رضی اللہ عنہ نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ایک نذر کے بارے میں مسئلہ پوچھا جو ان کی ماں کے ذمے تھی اور وہ اسے پوری کرنے سے پہلے ہی انتقال کر گئی تھیں تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اسے ان کی طرف سے تم پوری کرو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3850

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ آدَمَ،‏‏‏‏ وَهَارُونُ بْنُ إِسْحَاق الْهَمْدَانِيُّ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدَةَ،‏‏‏‏ عَنْ هِشَامٍ وَهُوَ ابْنُ عُرْوَةَ،‏‏‏‏ عَنْ بَكْرِ بْنِ وَائِلٍ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ:‏‏‏‏ جَاءَ سَعْدُ بْنُ عُبَادَةَ إِلَى النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ أُمِّي مَاتَتْ وَعَلَيْهَا نَذْرٌ فَلَمْ تَقْضِهِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ اقْضِهِ عَنْهَا .
It was narrated that Ibn 'Abbas said: Sa'd bin 'Ubadah came to the Prophet and said: 'My mother died and she had sworn a vow, but she did not fulfill it.' He said: 'Fulfill it on her behalf.' سعد بن عبادہ رضی اللہ عنہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آئے اور عرض کیا کہ میری ماں مر گئیں، ان کے ذمے ایک نذر تھی جو انہوں نے پوری نہیں کی تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اسے ان کی جانب سے تم پوری کر دو ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3851

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ مُوسَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ أَيُّوبَ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ عُمَرَ عَنْ عُمَرَ،‏‏‏‏ أَنَّهُ كَانَ عَلَيْهِ لَيْلَةٌ نَذَرَ فِي الْجَاهِلِيَّةِ يَعْتَكِفُهَا،‏‏‏‏ فَسَأَلَ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَأَمَرَهُ أَنْ يَعْتَكِفَ.
It was narrated from Ibn 'Umar, that 'Umar had vowed to spend a night in 'Itikaf during the Jahiliyyah. He asked the Messenger of Allah about that, and he ordered him to perform the 'Itikaf. انہوں نے جاہلیت میں ایک رات کی نذر مانی تھی کہ وہ اس میں اعتکاف کریں گے، تو انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا تو  آپ نے انہیں اعتکاف کرنے کا حکم دیا  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3852

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ يَزِيدَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ أَيُّوبَ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ كَانَ عَلَى عُمَرَ نَذْرٌ فِي اعْتِكَافِ لَيْلَةٍ فِي الْمَسْجِدِ الْحَرَامِ،‏‏‏‏ فَسَأَلَ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنْ ذَلِكَ،‏‏‏‏ فَأَمَرَهُ أَنْ يَعْتَكِفَ.
It was narrated that Ibn 'Umar said: Umar had made a vow to spend a night in 'Itikaf in Al-Masjid Al-Haram. He asked the Messenger of Allah about that, and he ordered him to perform the 'Itikaf. عمر رضی اللہ عنہ کے ذمہ مسجد الحرام میں ایک رات اعتکاف کرنے کی نذر تھی، انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے اس بارے میں سوال کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے انہیں اعتکاف کرنے کا حکم دیا۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3853

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الْحَكَمِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ جَعْفَرٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عُبَيْدَ اللَّهِ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ أَنَّ عُمَرَ كَانَ جَعَلَ عَلَيْهِ يَوْمًا يَعْتَكِفُهُ فِي الْجَاهِلِيَّةِ،‏‏‏‏ فَسَأَلَ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنْ ذَلِكَ،‏‏‏‏ فَأَمَرَهُ أَنْ يَعْتَكِفَهُ.
It was narrated from Ibn 'Umar that 'Umar had vowed -during the Jahiliyyah- to spend a day in 'Itikaf. He asked the Messenger of Allah about that, and he commanded him to perform the 'Itikaf. عمر رضی اللہ عنہ نے جاہلیت میں  ( مسجد الحرام میں )  ایک دن کا اعتکاف اپنے اوپر واجب کر لیا تھا، انہوں نے اس کے بارے میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا تو  آپ نے انہیں اس میں اعتکاف کرنے کا حکم دیا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3854

حَدَّثَنَا يُونُسُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي يُونُسُ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي عَبْدُ اللَّهِ بْنُ كَعْبِ بْنِ مَالِكٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ أَنَّهُ قَالَ لِرَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ حِينَ تِيبَ عَلَيْهِ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ،‏‏‏‏ إِنِّي أَنْخَلِعُ مِنْ مَالِي صَدَقَةً إِلَى اللَّهِ وَرَسُولِهِ،‏‏‏‏ فَقَالَ لَهُ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ أَمْسِكْ عَلَيْكَ بَعْضَ مَالِكَ فَهُوَ خَيْرٌ لَكَ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ يُشْبِهُ أَنْ يَكُونَ الزُّهْرِيُّ سَمِعَ هَذَا الْحَدِيثَ مِنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ كَعْبٍ،‏‏‏‏ وَمِنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ عَنْهُ فِي هَذَا الْحَدِيثِ الطَّوِيلِ تَوْبَةُ كَعْبٍ.
Abdullah bin Ka'b bin Malik narrated from his father, that he said to the Messenger of Allah -when his repentance was accepted: O Messenger of Allah! I want to give all my wealth in charity for Allah and His Messenger. The Messenger of Allah said to him: Keep some of your wealth for yourself; that is better for you. جب ان کی توبہ قبول ہوئی تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے عرض کیا: اللہ کے رسول! میں اللہ اور اس کے رسول کے نام پر صدقہ کر کے اپنے مال سے علیحدہ ہو جاتا ہوں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ان سے فرمایا:  اپنا کچھ مال روک لو یہ تمہارے لیے بہتر ہو گا ۱؎ ۔ ابوعبدالرحمٰن نسائی کہتے ہیں: ہو سکتا ہے کہ زہری نے اس حدیث کو عبداللہ بن کعب اور عبدالرحمٰن دونوں سے سنا ہو اور انہوں نے ان  ( کعب رضی اللہ عنہ )  سے روایت کی ہو ۲؎۔ اسی لمبی حدیث میں کعب رضی اللہ عنہ کی توبہ کا بھی ذکر ہے
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3855

أَخْبَرَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ دَاوُدَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا ابْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ عَنْ يُونُسَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ ابْنُ شِهَابٍ،‏‏‏‏ فَأَخْبَرَنِي عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ كَعْبِ بْنِ مَالِكٍ،‏‏‏‏ أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ كَعْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ كَعْبَ بْنَ مَالِكٍ يُحَدِّثُ حَدِيثَهُ حِينَ تَخَلَّفَ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي غَزْوَةِ تَبُوكَ قَالَ:‏‏‏‏ فَلَمَّا جَلَسْتُ بَيْنَ يَدَيْهِ،‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ،‏‏‏‏ إِنَّ مِنْ تَوْبَتِي أَنْ أَنْخَلِعَ مِنْ مَالِي صَدَقَةً إِلَى اللَّهِ وَإِلَى رَسُولِهِ. قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ أَمْسِكْ عَلَيْكَ بَعْضَ مَالِكَ فَهُوَ خَيْرٌ لَكَ . فَقُلْتُ:‏‏‏‏ فَإِنِّي أُمْسِكُ سَهْمِي الَّذِي بِخَيْبَرَ مُخْتَصَرٌ.
Abdur-Rahman bin Ka'b bin Malik narrated that 'Abdullah bin Ka'b said: I heard Ka'b bin Malik narrating his Hadith about when he stayed behind and did not join the Messenger of Allah on the campaign to Tabuk. He said: 'When I sat down before him I said: O Messenger of Allah, as part of my repentance I want to give my wealth in charity to Allah and His Messenger. The Messenger of Allah said: Keep some of your wealth for yourself; that is better for you. I said: I will keep my share that is in Khaibar. ' جب وہ غزوہ تبوک میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پیچھے رہ گئے تھے، وہ کہتے ہیں: جب میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے بیٹھا تو میں نے عرض کیا: اللہ کے رسول! میری توبہ میں سے یہ بھی ہے کہ میں اللہ اور اس کے رسول کو صدقہ کر کے اپنے مال سے الگ ہو جاؤں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اپنا کچھ مال اپنے لیے روک لو یہ تمہارے لیے بہتر ہو گا ، میں نے عرض کیا: اچھا تو میں اپنا وہ حصہ روک لیتا ہوں جو خیبر میں ہے، یہ حدیث مختصر ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3856

أَخْبَرَنَا يُوسُفُ بْنُ سَعِيدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حَجَّاجُ بْنُ مُحَمَّدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا لَيْثُ بْنُ سَعْدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي عُقَيْلٌ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ كَعْبٍ،‏‏‏‏ أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ كَعْبِ بْنِ مَالِكٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ كَعْبَ بْنَ مَالِكٍ يُحَدِّثُ حَدِيثَهُ حِينَ تَخَلَّفَ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي غَزْوَةِ تَبُوكَ،‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ،‏‏‏‏ إِنَّ مِنْ تَوْبَتِي أَنْ أَنْخَلِعَ مِنْ مَالِي صَدَقَةً إِلَى اللَّهِ وَإِلَى رَسُولِهِ،‏‏‏‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ أَمْسِكْ عَلَيْكَ مَالَكَ فَهُوَ خَيْرٌ لَكَ . قُلْتُ:‏‏‏‏ فَإِنِّي أُمْسِكُ عَلَيَّ سَهْمِي الَّذِي بِخَيْبَرَ.
Abdullah bin Ka'b bin Malik said: I heard Ka'b bin Malik narrating his Hadith about when he stayed behind and did not join the Messenger of Allah on the campaign to Tabuk. (he said) I said: 'As part of my repentance I want to give my wealth in charity for Allah and His Messenger.' The Messenger of Allah said: 'Keep some of your wealth for yourself; that is better for you.' I said: 'I will keep for myself my share that is in Khaibar.' جب وہ غزوہ تبوک میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پیچھے رہ گئے تھے۔  ( کہتے ہیں: )  میں نے عرض کیا: اللہ کے رسول! میری توبہ میں سے یہ بھی ہے کہ اللہ اور اس کے رسول کو صدقہ کر کے اپنے مال سے الگ ہو جاؤں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: تم اپنا  ( کچھ )  مال اپنے لیے روک لو یہ تمہارے لیے بہتر ہو گا ، میں نے عرض کیا: تو میں اپنے پاس اپنا وہ حصہ روک لیتا ہوں جو خیبر میں ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3857

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مَعْدَانَ بْنِ عِيسَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ أَعْيَنَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مَعْقِلٌ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِيعَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ كَعْبٍ،‏‏‏‏ عَنْ عَمِّهِ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ كَعْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ أَبِي كَعْبَ بْنَ مَالِكٍ يُحَدِّثُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ،‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ عَزَّ وَجَلَّ إِنَّمَا نَجَّانِي بِالصِّدْقِ،‏‏‏‏ وَإِنَّ مِنْ تَوْبَتِي أَنْ أَنْخَلِعَ مِنْ مَالِي صَدَقَةً إِلَى اللَّهِ وَإِلَى رَسُولِهِ. فَقَالَ:‏‏‏‏ أَمْسِكْ عَلَيْكَ بَعْضَ مَالِكَ،‏‏‏‏ فَهُوَ خَيْرٌ لَكَ . قُلْتُ:‏‏‏‏ فَإِنِّي أُمْسِكُ سَهْمِي الَّذِي بِخَيْبَرَ.
It was narrated from 'Ubaydullah bin Ka'b: I heard my father Ka'b bin Malik narrate: 'I said: O Messenger of Allah, Allah, the Mighty and Sublime, has saved me by my being truthful, and as part of my repentance I want to give my wealth in charity to Allah and His Messenger. He said: Keep some of your wealth for yourself; that is better for you. I said: I will keep my share that is in Khaibar.' میں نے عرض کیا: اللہ کے رسول! اللہ تعالیٰ نے مجھے صرف سچ کی وجہ سے نجات دی تو میری توبہ میں سے یہ ہے کہ اللہ اور اس کے رسول کو صدقہ کر کے اپنے مال سے الگ ہو جاؤں۔ آپ نے فرمایا:  اپنا کچھ مال اپنے پاس روک لو یہ تمہارے لیے بہتر ہو گا ، میں نے عرض کیا: تو میں اپنا وہ حصہ روک لیتا ہوں جو خیبر میں ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3858

قَالَ الْحَارِثُ بْنُ مِسْكِينٍ قِرَاءَةً عَلَيْهِ وَأَنَا أَسْمَعُ:‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ الْقَاسِمِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي مَالِكٌ،‏‏‏‏ عَنْ ثَوْرِ بْنِ زَيْدٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي الْغَيْثِ مَوْلَى ابْنِ مُطِيعٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَامَ خَيْبَرَ،‏‏‏‏ فَلَمْ نَغْنَمْ إِلَّا الْأَمْوَالَ،‏‏‏‏ وَالْمَتَاعَ،‏‏‏‏ وَالثِّيَابَ،‏‏‏‏ فَأَهْدَى رَجُلٌ مِنْ بَنِي الضُّبَيْبِ يُقَالُ لَهُ:‏‏‏‏ رِفَاعَةُ بْنُ زَيْدٍ لِرَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ غُلَامًا أَسْوَدَ يُقَالُ لَهُ مِدْعَمٌ فَوُجِّهَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِلَى وَادِي الْقُرَى،‏‏‏‏ حَتَّى إِذَا كُنَّا بِوَادِي الْقُرَى بَيْنَا مِدْعَمٌ يَحُطُّ رَحْلَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَجَاءَهُ سَهْمٌ فَأَصَابَهُ فَقَتَلَهُ،‏‏‏‏ فَقَالَ النَّاسُ:‏‏‏‏ هَنِيئًا لَكَ الْجَنَّةُ. فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ كَلَّا وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ،‏‏‏‏ إِنَّ الشَّمْلَةَ الَّتِي أَخَذَهَا يَوْمَ خَيْبَرَ،‏‏‏‏ مِنَ الْمَغَانِمِ،‏‏‏‏ لَتَشْتَعِلُ عَلَيْهِ نَارًا . فَلَمَّا سَمِعَ النَّاسُ بِذَلِكَ،‏‏‏‏ جَاءَ رَجُلٌ بِشِرَاكٍ،‏‏‏‏ أَوْ بِشِرَاكَيْنِ،‏‏‏‏ إِلَى رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ شِرَاكٌ أَوْ شِرَاكَانِ مِنْ نَارٍ .
It was narrated that Abu Hurairah said: We were with the Messenger of Allah in the year of Khaibar, and we did not get any spoils of war except for wealth, goods and clothes. Then a man from Banu Ad-Dubaib, who was called Rifa'ah bin Zaid, gave the Messenger of Allah a black slave who was called Mid'am. The Messenger of Allah set out for Wadi Al-Qura. When we were in Wadi Al-Qura, while Mid'am was unloading the luggage of the Messenger of Allah, an arrow came and killed him. The people said: 'Congratulations! You will go to Paradise,' but the Messenger of Allah said: 'No, by the One in Whose hand is my soul! The cloak that he took from the spoils of war on the Day of Khaibar is burning him with fire.' When the people heard that, a man brought one or two shoelaces to the Messenger of Allah and the Messenger of Allah said: 'One or two shoelaces of fire.' خیبر کے سال ہم لوگ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ تھے، ہمیں مال ۱؎، سامان اور کپڑوں کے علاوہ کوئی غنیمت نہ ملی تو بنو ضبیب کے رفاعہ بن زید نامی ایک شخص نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو مدعم نامی ایک کالا غلام ہدیہ کیا، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے وادی قریٰ کا رخ کیا، یہاں تک کہ جب ہم وادی قریٰ میں پہنچے تو مدعم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا کجاوا اتار رہا تھا کہ اسی دوران اچانک ایک تیر آ کر اسے لگا اور اسے قتل کر ڈالا، لوگوں نے کہا کہ تمہیں جنت مبارک ہو، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  ہرگز نہیں، قسم ہے اس ذات کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے! وہ کملی جو اس نے غنیمت کے مال سے خیبر کے روز لے لی تھی  ( اور مال تقسیم نہ ہوا تھا )  اس کے سر پر آگ بن کر دہک رہی ہے ۔ جب لوگوں نے یہ بات سنی تو ایک شخص چمڑے کا ایک یا دو تسمہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس لے کر آیا تو آپ نے فرمایا:  یہ ایک یا دو تسمے آگ کے ہیں ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3859

أَخْبَرَنَا يُونُسُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي عَمْرُو بْنُ الْحَارِثِ،‏‏‏‏ أَنَّ كَثِيرَ بْنَ فَرْقَدٍ حَدَّثَهُ،‏‏‏‏ أَنَّنَافِعًا حَدَّثَهُمْ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ فَقَدِ اسْتَثْنَى .
Abdullah bin 'Umar said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath and says: If Allah wills, then he has made an exception.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے قسم کھائی اور ان شاءاللہ کہا تو اس نے استثناء کر لیا  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3860

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ أَيُّوبَ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ فَقَدِ اسْتَثْنَى .
It was narrated that Ibn 'Umar said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath and says: If Allah wills, then he has made an exception.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے قسم کھائی اور  ان شاءاللہ  کہا تو اس نے استثناء کر لیا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3861

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ سُلَيْمَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَفَّانُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَيُّوبُ،‏‏‏‏ عَنْ نَافِعٍ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ فَهُوَ بِالْخِيَارِ،‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ أَمْضَى،‏‏‏‏ وَإِنْ شَاءَ تَرَكَ .
It was narrated from Ibn 'Umar that the Messenger of Allah said: Whoever swears an oath and says, 'If Allah wills,' then he has the choice: If he wishes, he may go ahead, and if he wishes he may not. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے کسی بات پر قسم کھائی اور  ان شاءاللہ  کہا تو اب اسے اختیار ہے چاہے تو قسم پوری کرے اور چاہے تو نہ کرے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3862

أَخْبَرَنَا عِمْرَانُ بْنُ بَكَّارٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَيَّاشٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا شُعَيْبٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَبُو الزِّنَادِ،‏‏‏‏ مِمَّا حَدَّثَهُ عَبْدُ الرَّحْمَنِ الْأَعْرَجُ،‏‏‏‏ مِمَّا ذَكَرَ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ يُحَدِّثُ بِهِ،‏‏‏‏ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ سُلَيْمَانُ بْنُ دَاوُدَ:‏‏‏‏ لَأَطُوفَنَّ اللَّيْلَةَ عَلَى تِسْعِينَ امْرَأَةً،‏‏‏‏ كُلُّهُنَّ يَأْتِي بِفَارِسٍ يُجَاهِدُ فِي سَبِيلِ اللَّهِ عَزَّ وَجَلَّ. فَقَالَ لَهُ صَاحِبُهُ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ،‏‏‏‏ فَلَمْ يَقُلْ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ،‏‏‏‏ فَطَافَ عَلَيْهِنَّ جَمِيعًا،‏‏‏‏ فَلَمْ تَحْمِلْ مِنْهُنَّ إِلَّا امْرَأَةٌ وَاحِدَةٌ،‏‏‏‏ جَاءَتْ بِشِقِّ رَجُلٍ،‏‏‏‏ وَأَيْمُ الَّذِي نَفْسُ مُحَمَّدٍ بِيَدِهِ،‏‏‏‏ لَوْ قَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ لَجَاهَدُوا فِي سَبِيلِ اللَّهِ فُرْسَانًا أَجْمَعِينَ .
Abu Hurairah narrated that the Messenger of Allah said: Sulaiman bin Dawud said: 'Tonight I will go around ninety women, each of whom will bear a horseman who will perform Jihad in the cause of Allah.' His companion said to him: 'If Allah wills.' But he did not say: 'If Allah wills.' Then he went around to them all, but none of them got pregnant except a woman who bore half a man. By the One in Whose Hand is my soul! If he had said, 'If Allah wills,' they would all have performed Jihad in the cause of Allah as horsemen. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  سلیمان بن داود علیہ السلام نے  ( قسم کھا کر )  کہا: آج رات میں نوے بیویوں کے پاس جاؤں گا، ان میں سے ہر کوئی ایک سوار کو جنم دے گی جو اللہ کے راستے میں جہاد کرے گا، تو ان کے ساتھی نے ان سے کہا:  ان شاءاللہ   ( اگر اللہ نے چاہا )  مگر خود انہوں نے نہیں کہا، پھر وہ ان تمام عورتوں کے پاس گئے لیکن ان میں سوائے ایک عورت کے کوئی بھی حاملہ نہ ہوئی اور اس نے بھی ایک ادھورے بچے کو جنم دیا، قسم ہے اس ذات کی جس کے ہاتھ میں محمد کی جان ہے! اگر انہوں نے  ان شاءاللہ  کہا ہوتا تو وہ تمام بیٹے اللہ کی راہ میں سوار ہو کر جہاد کرتے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3863

أَخْبَرَنَا يُونُسُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي عَمْرُو بْنُ الْحَارِثِ،‏‏‏‏ أَنَّ كَثِيرَ بْنَ فَرْقَدٍ حَدَّثَهُ،‏‏‏‏ أَنَّنَافِعًا حَدَّثَهُمْ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ فَقَدِ اسْتَثْنَى .
It was narrated from 'Uqbah bin 'Amir that the Messenger of Allah said: The expiation for vows is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جس نے قسم کھائی اور ان شاءاللہ کہا تو اس نے استثناء کر لیا  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3864

أَخْبَرَنَا كَثِيرُ بْنُ عُبَيْدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ حَرْبٍ،‏‏‏‏ عَنْ الزُّبَيْدِيِّ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ أَنَّهُ بَلَغَهُ عَنِ الْقَاسِمِ،‏‏‏‏ عَنْ عَائِشَةَ،‏‏‏‏ قَالَتْ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ .
It was narrated that 'Aishah said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow to commit an act of disobedience.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہ کے کاموں )  میں نذر نہیں ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3865

أَخْبَرَنَا يُونُسُ بْنُ عَبْدِ الْأَعْلَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي يُونُسُ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي سَلَمَةَ،‏‏‏‏ عَنْعَائِشَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ .
It was narrated from 'Aishah that the Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3866

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الْمُبَارَكِ الْمُخَرِّمِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ آدَمَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا ابْنُ الْمُبَارَكِ،‏‏‏‏ عَنْ يُونُسَ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي سَلَمَةَ عَنْ عَائِشَةَ،‏‏‏‏ قَالَتْ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated that 'Aishah said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3867

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا عُثْمَانُ بْنُ عُمَرَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يُونُسُ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي سَلَمَةَ،‏‏‏‏ عَنْعَائِشَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated from 'Aishah that the Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3868

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو صَفْوَانَ،‏‏‏‏ عَنْ يُونُسَ،‏‏‏‏ عَنِ الزُّهْرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي سَلَمَةَ،‏‏‏‏ عَنْ عَائِشَةَ،‏‏‏‏ قَالَتْ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ وَقَدْ قِيلَ:‏‏‏‏ أَنَّ الزُّهْرِيَّ لَمْ يَسْمَعْ هَذَا مِنْ أَبِي سَلَمَةَ.
It was narrated that 'Aishah said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔ ابوعبدالرحمٰن نسائی کہتے ہیں: کہا گیا ہے کہ زہری نے اسے ابوسلمہ سے نہیں سنا ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3869

أَخْبَرَنَا هَارُونُ بْنُ مُوسَى الْفَرَوِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو ضَمْرَةَ،‏‏‏‏ عَنْ يُونُسَ،‏‏‏‏ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو سَلَمَةَ،‏‏‏‏ عَنْعَائِشَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهَا كَفَّارَةُ الْيَمِينِ .
It was narrated from 'Aishah that the Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3870

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ إِسْمَاعِيل التِّرْمِذِيُّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَيُّوبُ بْنُ سُلَيْمَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي أُوَيْسٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي سُلَيْمَانُ بْنُ بِلَالٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ أَبِي عَتِيقٍ،‏‏‏‏ وَمُوسَى بْنِ عُقْبَةَ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ،‏‏‏‏ عَنْ سُلَيْمَانَ بْنِ أَرْقَمَ،‏‏‏‏ أَنَّيَحْيَى بْنَ أَبِي كَثِيرٍ الَّذِي كَانَ يَسْكُنُ الْيَمَامَةَ حَدَّثَهُ،‏‏‏‏ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا سَلَمَةَ يُخْبِرُ،‏‏‏‏ عَنْ عَائِشَةَ،‏‏‏‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهَا كَفَّارَةُ يَمِينٍ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ سُلَيْمَانُ بْنُ أَرْقَمَ مَتْرُوكُ الْحَدِيثِ وَاللَّهُ أَعْلَمُ،‏‏‏‏ خَالَفَهُ غَيْرُ وَاحِدٍ مِنْ أَصْحَابِ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ فِي هَذَا الْحَدِيثِ.
It was narrated from 'Aishah that the Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہوں کے کاموں )  میں نذر نہیں اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔ ابوعبدالرحمٰن نسائی کہتے ہیں:  سلیمان بن ارقم  متروک الحدیث راوی ہے، واللہ اعلم، اس حدیث کے سلسلے میں یحییٰ بن ابی کثیر کے تلامذہ میں سے کئی ایک نے سلیمان بن ارقم کی مخالفت کی ہے ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3871

أَخْبَرَنَا هَنَّادُ بْنُ السَّرِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ وَكِيعٍ،‏‏‏‏ عَنِ ابْنِ الْمُبَارَكِ وَهُوَ عَلِيٌّ،‏‏‏‏ عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ الْحَنْظَلِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہ کے کاموں )  کی نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3872

أَخْبَرَنِي عَمْرُو بْنُ عُثْمَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا بَقِيَّةُ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِي عَمْرٍو وَهُوَ الْأَوْزَاعِيُّ،‏‏‏‏ عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ الْحَنْظَلِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ وَكَفَّارَتُهَا كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated that 'Imran bin Husain, may Allah be pleased with him, said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow to commit an act of disobedience, and its expiation is the expiation for an oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت  ( گناہ کے کام )  میں نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3873

أَخْبَرَنَا عَلِيُّ بْنُ مَيْمُونٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مَعْمَرُ بْنُ سُلَيْمَانَ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ بِشْرٍ،‏‏‏‏ عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدٍ الْحَنْظَلِيِّ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي غَضَبٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ مُحَمَّدُ بْنُ الزُّبَيْرِ ضَعِيفٌ لَا يَقُومُ بِمِثْلِهِ حُجَّةٌ،‏‏‏‏ وَقَدِ اخْتُلِفَ عَلَيْهِ فِي هَذَا الْحَدِيثِ.
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: 'There is no vow at a moment of anger and its expiation is the expiation for an oath.' رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  غضب کی نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔ ابوعبدالرحمٰن کہتے ہیں: محمد بن زبیر ضعیف ہیں، ان جیسے سے حجت قائم نہیں ہوتی اور اس حدیث کے سلسلے میں ان کے متعلق اختلاف کیا گیا ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3874

أَخْبَرَنِي إِبْرَاهِيمُ بْنُ يَعْقُوبَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ مُوسَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا شَيْبَانُ،‏‏‏‏ عَنْ يَحْيَى،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي غَضَبٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ .
It was narrated that 'Imran said: The Messenger of Allah said: There is no vow at a moment of anger and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  غضب کی نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3875

أَخْبَرَنَا قُتَيْبَةُ،‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا حَمَّادٌ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدٍ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي غَضَبٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ . وَقِيلَ:‏‏‏‏ إِنَّ الزُّبَيْرَ لَمْ يَسْمَعْ هَذَا الْحَدِيثَ مِنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ.
It was narrated that 'Imran said: The Messenger of Allah said: There is no vow at a moment of anger and its expiation is the expiation for an oath. It was said: Az-Zubair did not hear this Hadith from 'Imran bin Husain. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  غضب کی نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔ کہا گیا ہے کہ  ( محمد کے والد )  زبیر نے اس حدیث کو عمران بن حصین سے نہیں سنا۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3876

أَخْبَرَنِي مُحَمَّدُ بْنُ وَهْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سَلَمَةَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي ابْنُ إِسْحَاق،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ،‏‏‏‏ عَنْ أَبِيهِ،‏‏‏‏ عَنْرَجُلٍ مِنْ أَهْلِ الْبَصْرَةِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ صَحِبْتُ عِمْرَانَ بْنَ حُصَيْنٍ قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ:‏‏‏‏ النَّذْرُ نَذْرَانِ:‏‏‏‏ فَمَا كَانَ مِنْ نَذْرٍ فِي طَاعَةِ اللَّهِ فَذَلِكَ لِلَّهِ وَفِيهِ الْوَفَاءُ،‏‏‏‏ وَمَا كَانَ مِنْ نَذْرٍ فِي مَعْصِيَةِ اللَّهِ فَذَلِكَ لِلشَّيْطَانِ وَلَا وَفَاءَ فِيهِ،‏‏‏‏ وَيُكَفِّرُهُ مَا يُكَفِّرُ الْيَمِينَ .
It was narrated from Muhammad bin Az-Zubair, from his father, from a man from the inhabitants of Al-Basrah, who said: I accompanied 'Imran bin Husain, who said: 'I heard the Messenger of Allah say: Vows are of two types: A vow that is made to do an act of obedience to Allah; that is for Allah and must be fulfilled, and a vow that is made to do an act of disobedience to Allah; that is for Shaitan and should not be fulfilled, and its expiation is the expiation for an oath.' عمران بن حصین رضی اللہ عنہما کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے سنا:  نذر کی دو قسمیں ہیں: جو نذر اللہ کی اطاعت کی ہو تو وہ اللہ کے لیے ہے اور اسے پورا کرنا ہے اور جو نذر اللہ کی معصیت کی ہو تو وہ شیطان کی ہے اور اسے پورا نہیں کرنا ہے اور اس کا کفارہ وہی ہو گا جو قسم کا ہوتا ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3877

أَخْبَرَنِي إِبْرَاهِيمُ بْنُ يَعْقُوبَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَارِثِ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ الْحَنْظَلِيِّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي أَبِي،‏‏‏‏ أَنَّ رَجُلًا حَدَّثَهُ،‏‏‏‏ أَنَّهُ سَأَلَ عِمْرَانَ بْنَ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ عَنْ رَجُلٍ نَذَرَ نَذْرًا،‏‏‏‏ لَا يَشْهَدُ الصَّلَاةَ فِي مَسْجِدِ قَوْمِهِ ؟ فَقَالَ عِمْرَانُ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي غَضَبٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated that Muhammad bin Az-Zubayr Hanzali said: My father told me that a man told him, that he asked 'Imran bin Husain about a man who made a vow not to attend the prayers in the mosque of his people. 'Imran said: I heard the Messenger of Allah say: There is no vow at a moment of anger and its expiation is the expiation for an oath. ایک شخص نے ان سے بیان کیا کہ اس نے عمران بن حصین رضی اللہ عنہما سے ایک ایسے شخص کے بارے میں پوچھا، جس نے یہ نذر مانی کہ وہ اپنے قبیلے کی مسجد میں نماز میں حاضر نہیں ہو گا، تو عمران رضی اللہ عنہ نے کہا: میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے سنا ہے:  غضب کی کوئی نذر نہیں ہوتی اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3878

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَرْبٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو دَاوُدَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ وَلَا غَضَبٍ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ يَمِينٍ .
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience or at the time of anger, and its expiation is the expiation for an oath. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت کی کوئی نذر نہیں، اور نہ ہی غضب میں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3879

أَخْبَرَنَا هِلَالُ بْنُ الْعَلَاءِ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو سُلَيْمٍ وَهُوَ عُبَيْدُ بْنُ يَحْيَى،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرٍ النَّهْشَلِيُّ،‏‏‏‏ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الزُّبَيْرِ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي الْمَعْصِيَةِ،‏‏‏‏ وَكَفَّارَتُهُ كَفَّارَةُ الْيَمِينِ . خَالَفَهُ مَنْصُورُ بْنُ زَاذَانَ فِي لَفْظِهِ.
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience and its expiation is the expiation for an oath. Mansur bin Zadhan contradicted him in his wording. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت میں نذر نہیں، اور اس کا کفارہ قسم کا کفارہ ہے ۔ منصور بن زاذان کی روایت کے الفاظ اس سے مختلف ہیں  ( ان کی روایت آگے آ رہی ہے ) ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3880

أَخْبَرَنَا يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا هُشَيْمٌ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا مَنْصُورٌ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ يَعْنِي النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ لِابْنِ آدَمَ فِيمَا لَا يَمْلِكُ،‏‏‏‏ وَلَا فِي مَعْصِيَةِ اللَّهِ عَزَّ وَجَلَّ . خَالَفَهُ عَلِيُّ بْنُ زَيْدٍ فَرَوَاهُ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ.
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: There is no vow for the son of Adam with regard to that which he does not possess, or to do an act of disobedience to Allah, the Mighty and Sublime. 'Ali bin Zaid contradicted him -for he reported it from Al-Hasan from 'Abdur-Rahman bin Samurah. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  آدمی کی ایسی چیزوں میں نذر نہیں، جن کا اسے اختیار نہیں اور نہ ہی اللہ کی معصیت میں نذر ہے ۔ علی بن زید نے منصور کی مخالفت کی ہے اور اسے بسند حسن بصری عن عبدالرحمٰن بن سمرہ سے روایت کی ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3881

أَخْبَرَنِي عَلِيُّ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِيٍّ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَلَفُ بْنُ تَمِيمٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا زَائِدَةُ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ زَيْدِ بْنِ جَدْعَانَ،‏‏‏‏ عَنْ الْحَسَنِ،‏‏‏‏ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ سَمُرَةَ،‏‏‏‏ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ،‏‏‏‏ وَلَا فِيمَا لَا يَمْلِكُ ابْنُ آدَمَ . قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ:‏‏‏‏ عَلِيُّ بْنُ زَيْدٍ ضَعِيفٌ،‏‏‏‏ وَهَذَا الْحَدِيثُ خَطَأٌ،‏‏‏‏ وَالصَّوَابُ:‏‏‏‏ عِمْرَانُ بْنُ حُصَيْنٍ،‏‏‏‏ وَقَدْ رُوِيَ هَذَا الْحَدِيثُ عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ مِنْ وَجْهٍ آخَرَ.
It was narrated from 'Abdur-Rahman bin Samurah that the Prophet said: There is no vow to commit an act of disobedience or with regard to that which the son of Adam does not possess. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت میں کوئی نذر نہیں اور نہ ہی کسی ایسی چیز میں کوئی نذر ہے جس کا آدمی کو اختیار نہیں ۔ ابوعبدالرحمٰن نسائی کہتے ہیں: علی بن زید ضعیف ہیں اور اس حدیث میں غلطی ہوئی ہے اور صحیح عمران بن حصین رضی اللہ عنہما ہے اور دوسری سند سے یہ حدیث عمران بن حصین رضی اللہ عنہما سے روایت کی گئی ہے۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3882

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مَنْصُورٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَيُّوبُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو قِلَابَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَمِّهِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَا نَذْرَ فِي مَعْصِيَةٍ وَلَا فِيمَا لَا يَمْلِكُ ابْنُ آدَمَ .
It was narrated that 'Imran bin Husain said: The Messenger of Allah said: There is no vow to commit an act of disobedience or with regard to that which the son of Adam does not possess. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  معصیت میں کوئی نذر نہیں اور نہ ہی ایسی چیز میں کوئی نذر ہے جس کا آدمی کو اختیار نہیں ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3883

أَخْبَرَنَا إِسْحَاق بْنُ إِبْرَاهِيمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا حَمَّادُ بْنُ مَسْعَدَةَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ حُمَيْدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ثَابِتٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَنَسٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ رَأَى النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ رَجُلًا يُهَادَى بَيْنَ رَجُلَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ مَا هَذَا ؟ . قَالُوا:‏‏‏‏ نَذَرَ أَنْ يَمْشِيَ إِلَى بَيْتِ اللَّهِ. قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ غَنِيٌّ عَنْ تَعْذِيبِ هَذَا نَفْسَهُ مُرْهُ فَلْيَرْكَبْ .
It was narrated that Anas said: The Prophet saw a man being supported by two others and said: 'What is this?' They said: 'He vowed to walk to the House of Allah.' He said: 'Allah has no need for this man to torture himself. Tell him to ride.' نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک شخص کو دیکھا کہ وہ دو آدمیوں کے بیچ میں ان کے کندھے پر ہاتھ رکھ کر چل رہا ہے، آپ نے فرمایا: یہ کیا ہے؟  لوگوں نے عرض کیا: اس نے نذر مانی ہے کہ وہ بیت اللہ تک پیدل چل کر جائے گا، آپ نے فرمایا:  اس طرح اپنی جان کو تکلیف دینے کی اللہ کو ضرورت نہیں، اس سے کہو کہ سوار ہو کر جائے  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3884

أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا خَالِدٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا حُمَيْدٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ثَابِتٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَنَسٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ مَرَّ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِشَيْخٍ يُهَادَى بَيْنَ اثْنَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ مَا بَالُ هَذَا ؟ . قَالُوا:‏‏‏‏ نَذَرَ أَنْ يَمْشِيَ. قَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ غَنِيٌّ عَنْ تَعْذِيبِ هَذَا نَفْسَهُ،‏‏‏‏ مُرْهُ فَلْيَرْكَبْ . فَأَمَرَهُ أَنْ يَرْكَبَ.
It was narrated that Anas said: The Messenger of Allah passed by an old man who was being supported between two men and said: 'What is the matter with him?' They said: 'He vowed to walk.' He said: 'Allah has no need for him to torture himself. Tell him to ride.' So he was told to ride. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا گزر ایک ایسے بوڑھے شخص کے پاس سے ہوا جو دو آدمیوں کے درمیان ان کے کندھے پر ہاتھ رکھ کر چل رہا تھا۔ آپ نے فرمایا:  اس کا کیا حال ہے؟  ان لوگوں نے عرض کیا: اس نے  ( کعبہ )  پیدل جانے کی نذر مانی ہے، آپ نے فرمایا:  اس کے اس طرح اپنی جان کو تکلیف پہنچانے کی اللہ کو ضرورت نہیں، اسے حکم دو کہ سوار ہو کر چلے، چنانچہ انہوں نے اسے سوار ہونے کا حکم دیا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3885

أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَفْصٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي أَبِي، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي إِبْرَاهِيمُ بْنُ طَهْمَانَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ يَحْيَى بْنِ سَعِيدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ حُمَيْدٍ الطَّوِيلِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَتَى رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَلَى رَجُلٍ يُهَادَى بَيْنَ ابْنَيْهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ مَا شَأْنُ هَذَا ؟ . فَقِيلَ:‏‏‏‏ نَذَرَ أَنْ يَمْشِيَ إِلَى الْكَعْبَةِ. فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّ اللَّهَ لَا يَصْنَعُ بِتَعْذِيبِ هَذَا نَفْسَهُ شَيْئًا ، ‏‏‏‏‏‏فَأَمَرَهُ أَنْ يَرْكَبَ.
It was narrated that Anas bin Malik said: The Messenger of Allah came to a man who was being supported by two others and said: 'What is the matter with him?' It was said: 'He vowed to walk to the Ka'bah.' He said: 'Allah does not benefit from his torturing himself.' And he told him to ride. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ایک ایسے شخص کے پاس سے گزر ہوا جو اپنے دو بیٹوں کے درمیان ان کے کندھوں کا سہارا لیے چل رہا تھا، آپ نے فرمایا:  اس کا کیا معاملہ ہے؟  عرض کیا گیا: اس نے کعبہ پیدل جانے کی نذر مانی ہے، آپ نے فرمایا:  اس طرح اپنے آپ کو تکلیف دینے سے اللہ تعالیٰ اس کو کوئی ثواب نہیں دے گا، پھر آپ نے اسے سوار ہونے کا حکم دیا ۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3886

أَخْبَرَنَا نُوحُ بْنُ حَبِيبٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا مَعْمَرٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ طَاوُسٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ مَنْ حَلَفَ عَلَى يَمِينٍ،‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ،‏‏‏‏ فَقَدِ اسْتَثْنَى .
It was narrated that Abu Hurairah said: The Messenger of Allah said: 'Whoever swears an oath and says: If Allah wills, then he has made an exception. ' کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جو شخص کسی بات کی قسم کھائے، پھر وہ ان شاءاللہ کہے تو اس نے استثناء کر لیا  ۱؎۔
Share Ravi Bookmark Report

حدیث نمبر 3887

أَخْبَرَنَا الْعَبَّاسُ بْنُ عَبْدِ الْعَظِيمِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا مَعْمَرٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ طَاوُسٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَفَعَهُ، ‏‏‏‏‏‏ قَالَ سُلَيْمَانُ:‏‏‏‏ لَأَطُوفَنَّ اللَّيْلَةَ عَلَى تِسْعِينَ امْرَأَةً تَلِدُ كُلُّ امْرَأَةٍ مِنْهُنَّ غُلَامًا يُقَاتِلُ فِي سَبِيلِ اللَّهِ. فَقِيلَ لَهُ:‏‏‏‏ قُلْ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ، ‏‏‏‏‏‏فَلَمْ يَقُلْ، ‏‏‏‏‏‏فَطَافَ بِهِنَّ،‏‏‏‏ فَلَمْ تَلِدْ مِنْهُنَّ إِلَّا امْرَأَةٌ وَاحِدَةٌ نِصْفَ إِنْسَانٍ ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ لَوْ قَالَ:‏‏‏‏ إِنْ شَاءَ اللَّهُ لَمْ يَحْنَثْ،‏‏‏‏ وَكَانَ دَرَكًا لِحَاجَتِهِ .
It was narrated from Abu Hurairah, who attributed it to the Prophet: Sulaiman said: 'I will certainly go around to ninety women tonight, each of whom will bear a child who will fight in the cause of Allah.' It was said to him: 'Say: If Allah wills' but he did not say it. He went around to them but none of them bore a child except for one woman who bore half a person. The Messenger of Allah said: If he had said: 'If Allah wills,' he would not have broken his vow, and this would have been a means to help him to get what he wanted. رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  سلیمان علیہ السلام نے کہا: آج رات میں نوے  ( ۹۰ )  عورتوں  ( بیویوں )  کے پاس جاؤں گا، ان میں سے ہر عورت ایک ایسا بچہ جنے گی جو اللہ کی راہ میں جہاد کرے گا۔ ان سے کہا گیا: آپ ان شاءاللہ کہیں، لیکن انہوں نے نہیں کہا۔ سلیمان علیہ السلام اپنی عورتوں کے پاس گئے تو ان میں سے صرف ایک عورت نے آدھا بچہ جنا ، پھر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  اگر انہوں نے  ان شاءاللہ  کہا ہوتا تو وہ قسم توڑنے والے نہیں ہوتے اور اپنی حاجت پا لینے میں کامیاب بھی رہتے ۔